ہربنس پورہ : خاتون زیادتی کے بعد قتل ، نعش نہر کنارے پھینک دی ، ہری پور میں ڈیڑھ سالہ بچی سے زیادتی

لاہور+ ہری پور ( نامہ نگار)ہربنس پورہ کے علاقہ میں نامعلوم افرد نے 30سالہ خاتون کو اغواء اور زیادتی کے بعد تشد کا نشانہ بنا کر قتل کر دیا اور نعش کپڑے میں لپیٹ کر نہر کنارے پھینک کر فرار ہوگئے۔ جبکہ ہری پور میں ڈیڑھ سالہ بچی کو زیادتی کا نشانہ بنا دیا گیا، ملزم کو گرفتار کرلیا گیا۔ بتا یا جاتا ہے کہ ہربنس پورہ کے علاقہ میںمیڈیکل ہاؤسنگ سکیم کے سامنے نہر میں نہاتے ہوئے لڑکے جب نہر سے باہر نکلے تو انہوں نے کپڑوں میں لپٹی نامعلوم خاتون کی  نعش دیکھ کر پولیس کو اطلاع کی۔خاتون کی کپڑے میں لپٹی خون آلودہ نعش دیکھ کر علاقہ میں خوف وہراس پھیل گیا اور جائے وقوعہ پر لوگوں کی بڑی تعداد جمع ہو گئی۔ پولیس نے موقع پرپہنچ کر نعش قبضے میں لے لی۔ پولیس نے مقامی افرادسے پوچھ گچھ کی لیکن نعش کی شناخت نہ ہو سکی ہے۔ شبہ ظاہر کیا جارہا ہے کہ نامعلوم ملزمان نے خاتون کو اغواء اور زیادتی کے بعد تشد کا نشانہ بنا کر قتل کیا اور نعش کپڑے میں لپیٹ کرنہر کنارے پھینک کر فرار ہوگئے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ نامعلوم خاتون کو کسی اور جگہ پر قتل کیا گیا ہے اور نعش کو ملزمان رات کی تاریکی میں یہاں پر پھینک کر فرار ہوگئے جبکہ خاتون کے جسم پر تشد د کے نشانات ہیں۔ بظاہر ایسا لگتا ہے کہ خاتون کو مارنے سے پہلے تشدد کا نشانہ بنایا گیا اور اسکا گلا دبا کر قتل کیا گیا ہے۔ پولیس نے مزید بتا یا کہ خاتون سے ایسی کوئی چیز برآمد نہیں ہوئی جس سے اسکی شناخت ہو سکے تاہم اسکے ورثا کی تلاش جاری ہے۔ اصل حقائق پوسٹ مارٹم رپورٹ کے بعد سامنے آئیں گے۔ ادھر ہری پور کی نواحی بستی جاگل میں ڈیڑھ سالہ معصوم بچی کے ساتھ اسی کے محلہ دار آصف نے مبینہ زیادتی کی۔ بچی کے والد کی مدعیت پر نامزد ملزم کے خلاف پرچہ درج کردیا گیا اور تھانہ کھلابٹ نے فوری طور پر ملزم کو گرفتار بھی کرلیا۔ ملزم کیخلاف 377 کے تحت پرچہ درج کیا گیا۔ آخری اطلاعات آنے تک بچی کی حالت نازک بتائی جارہی ہے۔