کشمیر میں دوہرے پرچم کا نظام ختم کیا جائے: بی جے پی کی درفنطنی

نئی دہلی (کے پی آئی) بھارتیہ جنتا پارٹی نے دفعہ370 کے بعد جموں کشمیر کے لئے دوہرے پرچم کا نظام منسوخ کرنے کا مطالبہ کر کے نئے تنازعے کو جنم  دے دیا ہے۔پارٹی نے سرینگر میں اس کے نظریاتی رہنما شیاما پر سادمکھر جی کی یادگار قائم کرنے  کا بھی مطالبہ کیا ہے  جن کی 1953ء  میں ریاست میں دوران حراست موت واقع ہوئی تھی۔راجیہ سبھا میں مختلف ممبران کی طرف  سے  اپنے مطالبات سامنے رکھے جانے کے دوران بھارتیہ  جنتا پارٹی  کے رہنما ترون وجے نے  کہا کہ جموں کشمیر  میں  دوہرے پرچم کانظام ختم ہونا چاہیے۔ ترون وجے کا کہنا تھا ’’میں حکومت سے مطالبہ کرتا ہوں کہ وہ ریاست جموں وکشمیر میں دو پرچم کا نظام منسوخ کرے اور وہاں صرف ایک پر چم  کا نظام ہونا چاہیے‘‘۔ راجیہ سبھا میں بات کرتے ہوئے انہوں نے سرینگر میں بھارتیہ جن سنگ کے بانی اور بی جے پی کے نظریاتی لیڈر شیاما پرساد مکھرجی کی یادگار قائم کرنے کا مطالبہ بھی کیا۔ واضح رہے کہ شیاماپرسادمکھرجی دفعہ 370 اور ریاست کو حاصل خصوصی درجے کے سخت مخالف تھے۔انہوں نے اسی  ایجنڈے کے تحت 11مئی 1953ء کو لکھن پور کے ذریعے ریاست میں غیر قانونی طور پر  داخل ہونے کی کوشش کی جس کے دوران  وہ گرفتار ہوئے اور23 جون 1953ء  کو جیل کے اندر ہی ان کی موت واقع ہوئی۔ مبصرین کے مطابق  ترون وجے کا  یہ بیان ریاست میں تازہ  سیاسی بحث کو جنم دے سکتا ہے۔