مسقط سے آنیوالی پرواز میں خودکش بمبار کی اطلاع، لاہور ائرپورٹ پر ہنگامی صورتحال

لاہور (خبر نگار+ نامہ نگار) مسقط سے آنے والی پرواز میں خودکش دہشت گرد کی اطلاع نے لاہور ائرپورٹ پر ہنگامی صورتحال پیدا کر دی۔ شاہین ائر لائنز کی مسقط سے آنے والی پرواز کے لاہور ائرپورٹ پر اترنے سے پہلے اُسے کھڑا کرنے کے لئے ایک الگ تھلگ جگہ کو چنا گیا۔ اے ایس ایف کے کمانڈوز نے جہاز میں گھس کر ’’مبینہ خودکش بمبار‘‘ شاہ دلدار کو حراست میں لے لیا۔ شاہ دلدار کو ایجنسیوں اور اے ایس ایف کے کمانڈوز ایک الگ جگہ پر لے گئے۔ اس کی مکمل جامہ تلاشی اور اس کے سامان کی چھان بین کی گئی مگر کچھ بھی برآمد نہ ہوا۔ تفصیلات کے مطابق پی آئی اے کراچی سکیورٹی کو مسقط سے شاہ نواز نامی شخص نے اطلاع دی تھی کہ 8 جولائی کو مسقط سے صبح لاہور پہنچنے والی شاہین ائر لائنز کا مسافر جہاز کے لاہور پہنچتے ہی دہشت گردی کی واردات کرے گا جس میں جہاز اور مسافروں کو نقصان پہنچے گا۔ اس اطلاع کے ملنے پر سول ایوی ایشن، اے ایس ایف اور دیگر ایجنسیوں نے ہنگامی صورتحال سے نبٹنے کی تیاری کر لی جہاز کو الگ تھلگ جگہ پر لیجا کر کمانڈوز جہاز میں گھسے اور 120 مسافروں میں سے شاہ دلدار کی نشاندہی ہوتے  ہی اسے حراست میں لیکر جہاز سے باہر لے گئے۔ تمام مسافروں کو فوراً جہاز سے اتار کر بسوں میں بٹھا کر ائرپورٹ ٹرمینل امیگریشن کائونٹر بھجوا دیا گیا۔ عملے کے 8 ارکان کو بھی جہاز سے نکال لیا گیا۔ 3 گھنٹے سے زائد بم ڈسپوزل سکواڈ نے جہاز کی مکمل سرچ کرنے کے بعد اُسے کلیئر قرار دے دیا۔ اس دوران ایجنسیوں اور اے ایس ایف نے شاہ دلدار کی مکمل چھان بین کی اور اُسے بھی کلیئر قرار دے دیا۔ شاہ دلدار نے بتایا کہ وہ ڈھائی برس پہلے محنت مزدوری کرنے مسقط گیا تھا۔ اس کا اپنے بھائیوں سے جھگڑا چل رہا ہے۔ اس لئے اس کے بھائی شاہ نواز نے اسے مشکلات میں ڈالنے کے لئے اس کے دہشت گرد ہونے کی جعلی کال چلا دی۔ بعدازاں معلوم ہوا کہ کسی اور نے نہیں بلکہ اس کی اپنی بیوی نے ہی آشنا کے ساتھ ملکر دہشتگرد قرار دیا۔  لاہور کے علاقے حسنین آباد کی رہائشی خاتون سونیا نے رات گئے پولیس اور ایئرپورٹ حکام کو فون پر اطلاع دی کہ علی الصبح مسقط سے نجی ائیرلائن کے ذریعے آنے والا مسافر شاہ دلدار لاہور ایئرپورٹ پہنچنے پر خود کو دھماکے سے اڑا لے گا۔  پولیس نے خفیہ اطلاع دینے والی دلدار کی بیوی سونیا کو پہلے ہی حراست میں لے رکھا تھا، تفتیش کے بعد سونیا نے بتایا  اس نے ہمسائے کاشف کے ساتھ مل کر اپنے شوہر کو پھنسانے کا منصوبہ بنایا اور رات گئے اپنے دیور شاہنواز کا موبائل فون چرایا جس کے ذریعے پولیس اور ایئرپورٹ حکام کو دہشتگرد کی آمد کی اطلاع کی۔ دوسری جانب طیارے میں سوار مسافروں کا کہنا تھا کہ دلدار کی دوران پرواز کئی مسافروں سے تلخ کلامی ہوئی اور اس کے چہرے پر پریشانی واضح تھی تاہم لاہور ایئرپورٹ پہنچنے پر وہ کچھ زیادہ ہی مشتعل ہوگیا تھا۔