اہم شخصیات نے مولانا طارق جمیل کو حکومت تحریک انصاف میں تلخیاں دور کرانے کی درخواست کی، عمران نے ملاقات میں کھل کر تحفظات بتائے: ذرائع

اسلام آباد (آئی این پی) مولانا طارق جمیل کی عمران خان کیساتھ گزشتہ روز ہونیوالی ملاقات کی مزید تفصیلات سامنے آئی ہیں۔ آئی این پی نے ذرائع کے حوالے سے دعویٰ کیا ہے کہ مولانا طارق جمیل مسلم لیگ(ن) اور تحریک انصاف کے درمیان پیدا ہونے والی تلخیوں کو ختم کرانے کیلئے سرگرم ہو گئے ہیں۔ انہوں نے تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان سے ملاقات میں حکومت کے خلاف 14 اگست کو لانگ مارچ کی کال واپس لینے کی درخواست کی اور  اپنے ساتھ حج پر چلنے کی دعوت بھی دیدی۔ ذرائع کے مطابق مولانا طارق جمیل جن کا وزیر اعظم نوازشریف اور ان کی بعض قریبی شخصیات کے ساتھ گہرا تعلق بتایا جاتا ہے سے بعض اہم شخصیات نے رابطہ کر کے ملکی سیاست سے تلخیوں کے خاتمہ کیلئے اپنا کردار ادا کرنے کی درخواست کی۔ مولانا طارق جمیل نے عمران خان سے کہا کہ آپکے اوپر بہت بھاری ذمہ داریاں عائد ہوتی ہیں، وہ قوم کو انتشار کا شکار کرنے کی بجائے متحد کر یں۔ ذرائع کے مطابق عمران خان نے اس موقع پر کھل کر مولانا طارق جمیل کے سامنے اپنے تحفظات بیان کئے اور کہا کہ نوازشریف حکومت نے انکو اس انتہائی اقدام پر مجبور کیا ہے۔ مولانا نے عمران خان کو صبر و تحمل کا مشورہ دیا اور کہا کہ وہ اس بارے میں دوسری طرف بھی بات کریں گے۔ دریں اثناء تحریک انصاف مرکزی میڈیا سیل کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق مولانا طارق جمیل نے تبلیغی جماعت کے اکابرین کے ہمراہ چیئرمین تحریک انصاف سے انکی رہائشگاہ پر ملاقات کی۔ ملاقات کے دوران پاکستان اور عالم اسلام سمیت دنیا بھر میں اسلام اور اہل اسلام کو درپیش مسائل کا تذکرہ کیا گیا۔