64 سیاستدانوں، معروف شخصیات کے اثاثوں کی واپسی کیلئے درخواست، مشرف کا جواب جمع

لاہور(وقائع نگار خصوصی) لاہور ہائیکورٹ نے نواز شریف،شہباز شریف،چوہدری شجاعت، عمران خان ،سردار ایاز صادق سمیت 64 سیاست دانوں اور معروف شخصیات کے بیرون ملک اثاثے واپس لانے کے لئے دائر درخواست کی سماعت دس جنوری تک ملتوی کر دی۔، عدالتی حکم پرپرویز مشرف کی جانب سے جواب داخل کرا دیا گیا۔ درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ نواز شریف،شہباز شریف، چوہدری شجاعت حسین،عمران خان، سردار ایاز صادق،اسحاق ڈار،جاوید ہاشمی،فاروق ستار،نجم سیٹھی،میاں منشاء،عاصمہ جہانگیر،خواجہ شریف ،حمزہ شہباز شریف ،شاہد خاقان عباسی،رانا تنویر اور شیخ رشید نے چار سو ارب ڈالر غیر قانونی طور پر بیرون ملک منتقل کئے اور قومی خزانے کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا۔ نواز شریف کے صاحبزادوں نے برطانیہ میں149 جائیدادیں خریدیں جبکہ درخواست میں فریق بنائے گئے تمام سیاستدانوں نے بیرون ملک اثاثے بنا کر ملک کو کنگال کیا۔ رجسٹرار آفس میں موجود درخواست سے متعلقہ ریکارڈ غائب ہے۔ عدالتی حکم کے باوجود درخواست اور اس سے متعلقہ عدالتی ریکارڈ پیش نہ کیا گیا۔ مشرف کے وکیل ان کی جانب سے دو صفحات پر مشتمل جواب داخل کراتے ہوئے کہا کہ پرویز مشرف کے کوئی غیر قانونی اثاثے نہیں۔ اعتزاز احسن اور بشری اعتزاز کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ اعتزاز احسن اور ان کی اہلیہ بشری اعتزاز کے تمام اثاثوں جات کی تفصیلات الیکشن کمشن کو بھجوائی گئی ہیں ان کے اثاثہ جات ڈکلئیرڈ ہیں۔