بجلی اور گیس کی لوڈ شیڈنگ روکنے کیلئے لاہور ہائیکورٹ میں درخواست دائر

لاہور (وقائع نگار خصوصی) بجلی اور گیس کی لوڈشیڈنگ روکنے کیلئے لاہور ہائیکورٹ میں رٹ درخواست دائر کردی گئی۔ جوڈیشل ایکٹوازم پینل کی طرف سے دائر کی گئی درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ گیس اور بجلی کی قلت سے عوام کے بنیادی حقوق بالخصوص آرٹیکل 9 اور 14 متاثر ہو رہے ہیں وفاقی حکومت اور دیگر اداروں نے گردشی قرضوں کی مد میں تقریباً 420 ارب روپے سے زائد رقم ادا کی مگر لوڈ شیڈنگ ختم نہیں ہوئی، خاص طور پر سردیوں میں عوام لوڈ شیڈنگ کے عذاب میں مبتلا ہے۔ اِس وقت حالات یہ ہیں کہ گیس نہ تو پاور سیکٹر کو دی جا رہی ہے اور سی این جی سٹیشن بھی تقریباً بند پڑے ہیں مگر حیران کن بات ہے کہ عام صارفین کو گھریلو استعمال کیلئے گیس دستیاب نہیں۔ بجلی اور گیس کی فراہمی عوام کا بنیادی حق ہے اور یہ ذمہ داری آئین کے آرٹیکل 37 اور 38 نے مقرر کی ہے۔ عدالت سے استدعا کی گئی ہے کہ بجلی اور گیس صبح ناشتے کے وقت، دوپہر کے کھانے میں اور رات کے کھانے کے اوقات میں عام آدمی کو ہر حال میں میسر کرنے کے احکامات جاری ہونے چاہئیں۔