کراچی، کانسٹیبل سمیت 7 افراد قتل و غارت کا شکار، مزار قائد کے قریب 2 بھائی مار دئیے

کراچی (کرائم رپورٹر)کراچی میں اتوار کو تشدد اور فائرنگ کے واقعات میں پولیس اہلکار اور دو سگے بھائیوں سمیت 9 افراد ہلاک ہوگئے۔ تفصیلات  کے مطابق بہادرآباد کے علاقے میں ٹیپو سلطان روڈ پر اتوار کی دوپہر موٹر سائیکل سوار مسلح افراد نے گلی کی چوکیداری  پر مامور سکیورٹی گارڈ 26 سالہ سلیم خان کو فائرنگ کرکے ہلاک کردیا۔ مچھر کالونی سے 25 سالہ نوجوان کی بوری بند لاش ملی جسے فائرنگ  کرکے ہلاک  کیا گیا جو حلئے سے پٹھان لگتا ہے اور فرئیر کے علاقے میں ریس کورس گرائونڈ کے نزدیک نامعلوم افراد ایک شخص کی تشدد زدہ لاش پھینک کر فرار ہوگئے۔ دونوں مقتولین کی شناخت نہیں ہوسکی ہے۔ علاوہ ازیں مزار قائد کے قریب نامعلوم مسلح افراد کی  فائرنگ سے 24 سالہ مدبر رضا اور 26 سالہ حیدر رضا فائرنگ سے  جاں بحق ہوگئے۔ علاوہ ازیں ناتھا خان پل کے قریب فائرنگ سے ایک شخص جاں بحق ہوگیا۔ لیاری کے علاقے بہار کالونی میں نامعلوم افراد  کی فائرنگ سے 2 افراد جبکہ نیوکراچی میں نیو خمیسو گوٹھ کے قریب فائرنگ کرکے پولیس اہلکار کو تصور قتل اسکے ساتھی قربان کو شدید زخمی کردیا گیا۔ کینٹ اوور ہیڈ پل آدمی کالونی میں گرین بیلٹ سے 35 سالہ سندھی حلئے کے نوجوان کی نعش ملی پولیس نے رنچھور لائن  سے 4 ٹارگٹ  کلرز کوگرفتار کر لیا۔  دریں اثناء وزیراعلیٰ سندھ قائم علی شاہ نے مزار قائد کے قریب دو بھائیوں کے قتل پر گہرے دکھ کا اظہار کرتے ہوئے قانون نافذ کرنیوالے اداروں کو حملہ آوروں کی فوری گرفتاری کا حکم دیدیا۔ ادھر عیسیٰ نگری میں گذشتہ رات اہلسنت و الجماعت کے رہنما نور الزمان نقشبندی کی گاڑی پر نامعلوم افراد نے فائرنگ کر دی جس سے انکے ساتھی شدید زخمی ہو گئے نور الزماں محفوظ رہے۔