ہر نفَس ڈرتا ہوں اس امت کی بیداری سے میں

ایڈیٹر  |  فرمان اقبال
ہر نفَس ڈرتا ہوں اس امت کی بیداری سے میں

ہر نفَس ڈرتا ہوں اس امت کی بیداری سے میں
ہے حقیقت جس کے دیں کی احتسابِ کائنات
مست رکھو ذکر و فکر صبح گاہی میں اسے
پختہ تر کر دو مزاجِ خانقاہی میں اسے
(ارمغانِ حجاز)