سبزیوں کی آسمان کو چھوتی قیمتیں

ایڈیٹر  |  اداریہ
سبزیوں کی آسمان کو چھوتی قیمتیں

اتوار بازاروں میں سبزی کی قیمتوں میں ملا جُلا رجحان رہا جبکہ زیادہ تر پھلوں کی قیمتوں میں اضافہ ہو گیا ہے۔ آلو کی مصنوعی قلت بھی پیدا کی گئی۔
رمضان قریب آتے ہی مہنگائی کا طوفان اُمڈ آیا ہے، ذخیرہ اندوز متحرک ہو چکے ہیں۔ عوام گوشت تو پہلے ہی نہیں کھا سکتے اب سبزیاں بھی ان کی پہنچ سے دور ہو گئی ہیں جبکہ پھل کھانا تو غریب کیلئے ایک خواب بن چکا ہے۔ 15 سے 25 روپے کلو ملنے والی سبزیاں 50 روپے تک پہنچ چکی ہیں جبکہ آلو 70 روپے تک پہنچ چکا ہے۔ دو ہفتے قبل یہی آلو 25 سے 30 روپے کلو کے حساب سے مارکیٹ میں دستیاب تھا لیکن اچانک آلو کو سٹوروں میں ذخیرہ کر کے اس کو غریب کی پہنچ سے دور کر دیا گیا ہے۔ وزیر خزانہ نے تین روز قبل آلو کی بڑھتی قیمتوں پر ایکشن لیکر پرانے نرخوں یعنی 30 روپے پر لانے کا اعلان کیا تھا لیکن ابھی اس اعلان پر عمل ہوتے ہوئے نظر نہیں آ رہا۔ حکومت مارکیٹ کمیٹیوں کے ذریعے سٹوروں میں پڑے آلوئوں کو باہر نکلوائے تاکہ آلو کی قیمتیں غریب کی پہنچ میں آ سکیں۔ اس کے علاوہ حکومت اتوار بازاروں میں آسان نرخوں پر سبزیاں اور فروٹ کی فروخت یقینی بنائے تاکہ غریب آدمی پیٹ بھر کر کھانا تو کھا سکے۔