حکومت پنجاب کا اوورسیز تھانوں کے قیام کا مستحسن فیصلہ

ایڈیٹر  |  اداریہ
حکومت پنجاب کا اوورسیز تھانوں  کے قیام کا مستحسن فیصلہ

اوورسیز تھانے بنانے کا فیصلہ، پاکستانیوں کی محنت پر کسی کو ڈاکہ ڈالنے نہیں دیں گے، شہباز شریف۔ تھانے ان شہروں میں ترجیحی طور پر بنائے جائیں گئے جہاں کے لوگ بڑی تعداد میں بیرون ملک ہیں۔
پاکستانی معیشت اور ملکی استحکام میں بیرون ملک کام کرنے والے پاکستانیوں کا بہت بڑا ہاتھ ہے، دیار غیر میں کام کرنے والے یہ پاکستانی وہاں جو کچھ کماتے ہیں اس کا بڑا حصہ پاکستان میں اپنے اہلخانہ کو بھیجتے ہیں، یا پھر ملک میں آکر یہاں کوئی کاروبار کر کے یا پراپرٹی خرید کر اپنی رقم محفوظ کرتے ہیں۔ بدقسمتی سے ان کی غیر موجودگی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے اپنے ملک میں ان کے کاروبار اور پراپرٹی پر جرائم پیشہ افراد قبضہ کرلیتے ہیں۔ اس طرح ان کے خون پسینہ سے کمائی رقم لوٹ لیتے ہیں۔ یہ شکایات عرصہ دراز سے عام ہیں کہ بیرون ملک کام کرنے والے ان پاکستانیوں کو وطن واپسی پر اپنی رقم یا پراپرٹی کے حصول میں شدید دشواریوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ بااثر ملزمان ان کی چلنے نہیں دیتے۔ اب وزیراعلیٰ کی طرف سے ایسی شکایات کو رفع کرنے کے لئے اور اوورسیز پاکستانیوں کو بروقت انصاف کی فراہمی اور ان کے سرمائے کے تحفظ کے لئے جو اوورسیز تھانوں کے قیام کی منظوری دی گئی ہے اگر وہاں انصاف ایمانداری کے ساتھ کام کیا گیا تو یہ ان پاکستانیوں کے لئے بہترین سسٹم ثابت ہوگا اور ان کی شکایات کا بروقت ازالہ کیا جاسکے گا ایسے ادارے دوسرے صوبوں میں بھی بنانے کی ضرورت ہے۔