دہشتگردی کا سدباب سکیورٹی لیپس پر قابو پائے بغیر ممکن نہیں

ایڈیٹر  |  اداریہ
دہشتگردی کا سدباب سکیورٹی لیپس پر قابو پائے بغیر ممکن نہیں

آرمی چیف جنرل راحیل شریف کے بقول شکست خوردہ دہشت گرد آسان اہداف کو نشانہ بنا کر ہمارے ملک میں عدم استحکام پیدا کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ جب آرمی چیف کا یہ بیان آیا تو اسی روز کوئٹہ میں سائیکل بم دھماکے میں پانچ افراد جاں بحق اور 33 زخمی ہوگئے جس سے اس امر کا عندیہ ملتا ہے کہ دہشت گرد صرف آسان اہداف ہی نہیں‘ اپنے متعین کردہ تمام اہداف پر کامیابی حاصل کر رہے ہیں۔ چنانچہ اپریشن ضرب عضب میں کامیابیوں کے دعوئوں کے باوجود دہشت گردوں کی سرگرمیاں ابھی ختم نہیں ہوئیں۔ انکے نیٹ ورک اور ہمدرد ملک کے اندر اور باہردونوں جگہ بدستور موجود ہیں اور وہ مسلح اور منظم ہونے کے باعث اپنا آسان اور مشکل ہر طرح کا ہدف پورا کر رہے ہیں۔ آپریشن ضرب عضب ایک مشکل آپریشن تھا جسے فوج نے بڑی حکمت اور کامیابی سے انجام دیا اور اب بھی افواج پاکستان دہشت گردوں کے مذموم مقاصد کو ناکام بنانے اور پراکسی وار کی اجازت نہ دینے کیلئے بقول آرمی چیف پوری طرح چوکس اور پرعزم ہیں تاہم اس جنگ میں مکمل کامیابی حاصل کرنے اور دہشت گردی کا پوری طرح خاتمہ کرنے کیلئے ضروری ہے کہ سکیورٹی فورسز میں موجود کمزوریوں پر بھی قابو پانے کی کوئی تدبیر کی جائے۔