فیصل آباد میں پولیس گردی؟

ایڈیٹر  |  اداریہ
فیصل آباد میں پولیس گردی؟

فیصل آباد میں سوساں روڈ مدینہ چوک پر پولیس کی فائرنگ سے 15 سالہ فرحان جاں بحق ہوگیا۔ اہل محلہ نے بتایا کہ فرحان اور فہد چوک میں نقلی پستول سے کھیل رہے تھے کہ پولیس نے ان پر گولی چلا دی۔ پولیس کا موقف ہے کہ انہیں ون فائیو پر کال موصول ہوئی کہ ڈاکو شہریوں کو لوٹ رہے ہیں پولیس موقع پر پہنچی تو ڈاکوو¿ں نے فائرنگ کی جوابی فائرنگ سے فرحان نامی ڈاکو نشانہ بنا۔ ڈاکو سے 30 بور کا پستول برآمد ہوا۔
اہل محلہ اور پولیس کے متضاد موقف سے معاملہ گنجلک ہو گیا ہے۔ جہاں بہت سے سوال اٹھتے ہیں پولیس کب سے اتنی فعال ہو گئی کہ 15 کی کال پر پلک جھپکتے میں پہنچ گئی کہ ڈاکو لوٹ مار میں لگے ہوئے تھے۔ اہل محلہ تو مرنے والے نوجوان کی عمر 15سال بتا رہے ہیں اس میں مبالغہ ہو سکتا ہے اور جعلی ہی سہی چوک میں پستول سے کھیلنا مناسب نہیں۔ اگر پولیس کو واقعی ون فائیو پر کال کی گئی تھی تو کال کرنے والے کا ریکارڈ موجود ہوتا ہے اب تک پولیس حکام نے تحقیق کر لی ہو گی۔ ہماری پولیس فرضی اور جعلی کارروائیوں کے لیے شہرت رکھتی ہے۔ تحقیقات میں یہ واقعہ بھی فرضی ثابت ہوتا ہے تو ذمہ داروں کو عبرت کا نشان بنانا چاہیے تاکہ آئندہ ایسے واقعات کا اعادہ نہ ہو۔