کبڈی ورلڈ کپ، بھارت کا ایک اور فاﺅل پلے

ایڈیٹر  |  اداریہ
کبڈی ورلڈ کپ، بھارت کا  ایک اور فاﺅل پلے

بھارت میں ورلڈ کپ کبڈی کے فائنل میچ میں بے ایمانی، ریفریوں نے پاکستان ٹیم کا جیتا ہوا میچ ہار میں بدل دیا۔ کھلاڑیوں کی شکایات بھی سنی ان سنی کر دیں۔ میچ بھی وقت سے پہلے ختم کر دیا۔ آئندہ کھیلنے نہیں جائیں گے پاکستانی کپتان۔ معاملہ عالمی سطح پر اٹھائیں گے۔ صدر پاکستان کبڈی فیڈریشن۔ بھارت نے ہاکی کے میدان میں پاکستان کے ہاتھوں شکست کا بدلہ ورلڈ کبڈی کے فائنل میچ میں اس طرح لیا کہ جانبداری اور بے ایمانی کے اگلے پچھلے تمام ریکارڈ ٹوٹ گئے۔ میچ پاکستان کبڈی ٹیم کے حق میں جا رہا تھا۔ آخری لمحوں تک پاکستانی ٹیم 2 پوائنٹس سے آگے تھی کہ آخری مرحلے میں ریفریوں کے غلط فیصلوں اور پاکستانی کھلاڑیوں کی ان فیصلوں کے خلاف تمام تر اپیلوں کو مسترد کرتے ہوئے بھارتی کبڈی ٹیم کو تین پوائنٹس سے قبل از وقت میچ ختم کرکے جتوا دیا گیا۔ اب پاکستانی کھیلوں کی تنظیموں اور وزارت سپورٹس کو چاہئے کہ جس طرح بھارت نے ہاکی میچ کے اختتام پر کھلاڑیوں کے ذاتی ردعمل کا بہانہ بنا کر پاکستان کیخلاف عالمی تنظیم پر شکایت کی اس طرح فوری طور پر کبڈی کی انٹرنیشنل کونسل کے سامنے یہ مسئلہ اٹھائے اور بھرپور انداز میں بھارتی جانبدارانہ فیصلے کے خلاف کیس دائر کرے اور اس کا بھرپور دفاع کرے اس وقت معاملہ گرم ہے۔ پاکستان بھی بھارتی کبڈی ٹیم اور اسکے آفیشلز کو اسی طرح سزا دلوائے جسطرح اس نے پاکستان ہاکی ٹیم کے کھلاڑیوں کو دلوائی تھی اور آئندہ ایسے ایونٹس غیر جانبدار ملک میں غیر جانبدار ریفریوں کے زیر اہتمام کرانے پر زور دے۔ حکومت کو پھر اس امر کا جائزہ لینا چاہئیے کہ بھارتی مودی سرکار کسی کھیل کے میدان میں بھی پاکستان کے ساتھ دانستہ طور پر کشیدگی بڑھانے کی پالیسی پر تو گامزن نہیں؟