مذاکرات کی کامیابی کیلئے بم دھماکے بند کئے جائیں

ایڈیٹر  |  اداریہ
مذاکرات کی کامیابی کیلئے  بم دھماکے بند کئے جائیں

حکومت اور طالبان کے درمیان مذاکرات کیلئے مقام کے بارے میں وزارتِ داخلہ نے تجاویز تیار کر لی ہیں۔ وزیراعظم میاں نواز شریف کی جانب سے مجوزہ مذاکراتی مقام کے بارے گرین سگنل ملنے پر وفاقی وزیر داخلہ اس کا اعلان کر دینگے۔ دوسری طرف شمالی وزیرستان کی تحصیل شوال میں ایک گھر میں دھماکے سے خواتین اور بچے سمیت 6 افراد جاں بحق ہو گئے ہیں۔
طالبان اور حکومت کے مابین مذاکرات کو حتمی شکل دے دی گئی ہے۔ میاں نواز شریف کی طرف سے مجوزہ مذاکراتی مقام کے بارے گرین سگنل ملتے ہی دونوں کمیٹیوں کے مابین مذاکرات شروع ہو جائینگے۔ مذاکرات کا ہونا خوش آئند ہے۔ ہر شعبہ زندگی سے تعلق رکھنے والے فرد نے مذاکرات کی حمایت کی ہے لیکن مذاکرات اور بم دھماکے ساتھ ساتھ نہیں چل سکتے۔ ایک طرف مذاکرات کیلئے جگہ کا تعین کیا جا رہا ہے تو دوسری طرف شمالی وزیرستان میں مارٹر گولہ پھٹنے سے 4 خواتین سمیت 6 افراد جاں بحق ہو گئے ہیں۔ طالبان اگر مذاکرات میں مخلص ہیں تو انہیں بم دھماکے بند کرنا ہونگے۔ مذاکرات شروع ہوتے ہی فوج نے اپنی کارروائیاں بند کر دی ہیں۔ اگر طالبان ان کارروائیوں میں ملوث نہیں تو پھر وہ ان گروپوں کے خلاف خود اقدامات کریں جو مذاکرات کو سبوتاژ کرنے کی کوشش میں ہیں۔ مولانا سمیع الحق طالبان کو جنگ بندی پر قائم رکھیں تاکہ مذاکرات کامیاب ہو سکیں۔