الیکشن کمیشن اوورسیز پاکستانیوں کو ووٹ حق دینے پر آمادہ

چیف الیکشن کمشنر جسٹس (ر) فخر الکا دین جی ابراہیم کی صدارت میں الیکشن کمیشن کا اجلاس ہوا۔ اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو میں سیکرٹری الیکشن کمیشن نے بتایا کہ سمندر پار پاکستانےوں کے ووٹ کے بارے مےں آرڈیننس کی سمری کمےشن نے تےار کرلی ہے جسے دو روز مےں وزارت قانون کو بھجوا دےا جائیگا جو آرڈیننس کے اجرا اور منظوری کیلئے صدر کو بھجوائے گی۔
ووٹ کے حق کیلئے سمندر پار پاکستانی عرصہ سے تگ و دو کر رہے تھے۔ سپریم کورٹ نے الیکشن کمیشن کو متعدد بار سمندر پار پاکستانیوں کو ووٹ کا حق دینے کی ہدایت کی۔ الیکشن کمیشن اس پر کوئی واضح لائحہ عمل اختیار نہ کر سکا۔ سپریم کورٹ کے احکامات پر ٹال مٹول سے کام لیا جاتا رہا۔ کبھی قانون سازی نہ ہونے کا جواز تراشا گیا کہیں کمپیوٹر سے معلومات لیک ہونے کا بہانہ پیش کیا گیا۔ بہرحال اب الیکشن کمیشن اوورسیز پاکستانیوں کو 2013ءکے انتخابات میں شریک کرنے پر آمادہ ہو گیا ہے جو خوش آئند امر ہے۔ 60 لاکھ کے لگ بھگ اوورسیز پاکستانی اربوں ڈالر کا زرمبادلہ پاکستان بھجوا کر ملکی معیشت کو مضبوط بنانے میں اہم کردار ادا کرتے ہیں۔ وہیں پر موجود رہ کر انتخابی عمل کا حصہ بننا یقیناً ان کا آئینی حق ہے‘ جو بالآخر ان کو مل رہا ہے۔ یہ عمل چونکہ پہلی بار ہو رہا ہے اس لئے بہت ہی احتیاط کی ضرورت ہے۔ اسکے باوجود اگر کوئی کمی رہ جاتی ہے تو تجربے کی روشنی میں آسانی سے دور ہو سکتی ہے۔