اشیائے صرف کی قیمتوں میں اضافے سے غریب عوام متاثر

حکومت نے یوٹیلٹی سٹورز پر 100 سے زیادہ اشیاءکی قیمتوں میں اضافہ کر دیا گیا جس پر گذشتہ روز سے ان کی قیمتیں بڑھ گئیں ان اشیاءمیں گھی اور کوکنگ آئل کی قیمت میں 3 سے 10 روپے، دیسی گھی 27 روپے مہنگا اسکے ساتھ ٹوتھ پیسٹ، شیمپو اور واشنگ پاﺅڈر، کولڈ ڈرنک اور چائے کی پتی کی قیمتوں میں بھی 5 سے 15 روپے تک کا اضافہ کر دیا گیا۔ یوٹیلٹی سٹورز پر ان اشیاءکی قیمتوں میں اضافہ سے عوام کی رہی سہی قوت خرید کم ہو جائیگی۔ یوٹیلٹی سٹورز سے غریب اور متوسط طبقے کے لوگ فائدہ اٹھاتے ہیں اور یہاں اشیائے صرف کی قیمتوں میں کمی سے انہیں تھوڑا بہت ریلیف ملتا تھا۔ اب ان اشیاءکی قیمتیں بڑھنے سے انکی جیب پر بوجھ پڑیگا۔ یہ تمام اشیاءضروریات زندگی میں شامل ہیں اور انکے بغیر کوئی گھر نہیں چلتا۔ امراءکے زیر استعمال اشیائے تعیش کی قیمتوں میں اضافہ ہو تو ان پر اتنا خاص اثر نہیں ہوتا مگر اشیائے صرف کی قیمتوں میں اضافے سے غریب عوام بری طرح متاثر ہوتے ہیں جو پہلے ہی پانی، بجلی، گیس کی قیمتوں میں آئے روز اضافوں اور انکے نتیجے میں بڑھنے والی نان سٹاپ مہنگائی سے بری طرح پریشان ہیں اس لئے حکومت کو چاہیے کہ وہ یوٹیلٹی سٹور پر غریب عوام کی دسترس میں موجود اشیاءکی قیمتوں میں اضافے کے فیصلے پر نظرثانی کرے۔