محکمہ اوقاف و داخلہ مذہبی منافرت پر قابو پانے میں ناکام

ایڈیٹر  |  اداریہ
محکمہ اوقاف و داخلہ مذہبی منافرت پر قابو پانے میں ناکام

محکمہ اوقاف اور محکمہ داخلہ پنجاب اشتعال انگیز، مذہبی منافرت پر مبنی لٹریچر کیخلاف کارروائی کرنے میں ناکام ہو گئے محکمہ اوقاف کے متحدہ علما بورڈ کی جانب سے ہوم ڈیپارٹمنٹ کو 159 تحریروں کیخلاف کارروائی کی سفارش کی گئی جس پر آدھی سے زیادہ تعداد میں لٹریچر محکمہ داخلہ سے غائب ہو گیا۔
دہشت گردی کا خاتمہ تب ممکن ہو سکے گا جب ہم دہشتگردوں کی نرسری کو ختم کر دینگے۔ محکمہ اوقاف پنجاب جسکا کام مذہبی امور کو پنجاب میں دیکھنا ہے لیکن دہشت گردی ختم کرنے کے سلسلے میں اسکی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے۔ متحدہ علماء بورڈ نے 213 کیس کارروائی کیلئے محکمہ داخلہ کو بھیجے ہیں لیکن ہوم ڈیپارٹمنٹ نے ابھی تک کسی پریس کو سیل کیا نہ ہی تشدد اور دہشتگردی پر مبنی لٹریچر لکھنے والے کو گرفتار کیا۔ محکمہ اوقاف کے زیر انتظام مدارس میں الگ الگ نصاب ہے جبکہ مساجد میں جمعہ کے خطبات بھی ایک دوسرے سے الگ الگ ہوتے ہیں۔ محکمہ اوقاف کا کوئی چیک اینڈ بیلنس ہی نہیں ہے۔ ہوم ڈیپارٹمنٹ کو متحدہ علما بورڈ نے 159تحریروں کیخلاف کارروائی کی سفارش کی ہے لیکن ابھی تک کارروائی نہیں ہوئی۔ محکمہ اوقاف اور محکمہ داخلہ کو ایک میٹنگ کر کے کوئی لائحہ عمل ترتیب دینا چاہئیے تاکہ حکومت کی طرف سے دہشت گردی کے ناسور کو ختم کرنے میں کوئی کاہل یا سستی نہ ہو۔ وزیر اعلیٰ پنجاب دونوں محکموں کی کارکردگی کو جانچیں تاکہ دہشت گردی پر قابو پایا جا سکے۔