واپڈا اور اساتذہ کے دھرنوں اور بڑھتے جرائم نے گڈگورننس کا پول کھول دیا

ایڈیٹر  |  اداریہ
واپڈا اور اساتذہ کے دھرنوں اور بڑھتے  جرائم نے گڈگورننس کا پول کھول دیا

واپڈا کی مجوزہ نجکاری کے خلاف لیسکو کا احتجاج اور دھرنا جاری، کئی شہروں میں ہڑتال، جبکہ اساتذہ بھی اپنے مطالبات کے حق میں سراپا احتجاج ہیں۔ دوسری طرف لاہور میں 4 ماہ میں سنگین جرائم کی 20844 وارداتیں اور 9 شہری ڈکیتی کے دوران قتل ہوئے ہیں۔
حکومت پنجاب پلڈاٹ کی رپورٹ پر بہت خوش ہو رہی ہے کہ دیگر صوبوں کی نسبت اس کی کارکردگی بہت بہتر ہے۔ لیکن زمینی حقائق اس کے برعکس ہیں۔ صورتحال یہ ہے کہ واپڈا کے ملازمین گزشتہ4 روز سے سراپا احتجاج ہیںاور اساتذہ اپنے حقوق کیلئے مال روڈ پر دھرنا دیئے ہوئے ہیں۔ امن و امان کی صورتحال یہ ہے کہ 4 ماہ میں سنگین جرائم کی 20844 وارداتیں ہوئی ہیں۔ ان میں 9 شہری دوران ڈکیتی مزاحمت پر قتل کئے گئے ہیں۔ ڈکیتیوں کی 78 وارداتوں میں 3 کروڑ 14 لاکھ روپے لوٹے گئے لیکن آج تک ڈاکو پکڑے گئے نہ ہی کسی کا سامان برآمد ہوا ہے۔ حکومت پنجاب کو اپنی گورننس بالخصوص امن و امان کی جانب توجہ دینی چاہئیے کیونکہ چوکوں اور چوراہوں پر لوگوں کے احتجاج ان کی کارکردگی کی چغلی کھا رہے ہیں لہذا حکومت ان لوگوں کے مسائل حل کرے اور عوام الناس کے لئے ٹریفک کے مسائل پیدا نہ ہونے دے۔