چین کے ساتھ عوامی مفاد کے معاہدوں میں پیشرفت

پنجاب حکومت اور چین کی مشہور کمپنی نورینکو انٹرنیشنل کے درمیان توانائی، ٹرانسپورٹ، انفراسٹرکچر اور دیگر شعبوں میں تعاون کیلئے چیئرمین پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ سہیل احمد جبکہ نورینکو انٹرنیشنل کے صدر ہُیو فارونگ نے مفاہمت کی یادداشت پر دستخط کئے۔ جس کے مطابق نورینکو پنجاب حکومت کے ساتھ موٹروے کے قریب صنعتی شہر بسانے ، لاہور میں میٹرو ٹرین کیلئے انفراسٹرکچر کی تعمیر، چولستان میں سولر انرجی کے منصوبے لگانے، سولر اریگیشن کے منصوبے اور سڑکوں کے مختلف منصوبوں کے حوالے سے تعاون کریگی۔ نورینکو دیگر شعبوں میں بھی پنجاب حکومت سے تعاون کریگی۔ وزیر اعلیٰ شہباز شریف نے کہا ہے کہ نورینکو اور پنجاب حکومت کے مابین مفاہمت کی یادداشت پر دستخط خوش آئند ہےں جس سے پنجاب میں ترقی کی رفتار مزید تیز ہو گی۔
پاکستان کے پاس وسائل کی کمی نہیں جن کا استعمال حکام کی غفلت اور مطلوبہ ٹیکنالوجی کی عدم موجودگی کے باعث نہیں ہو سکا جس کے باعث ملک و قوم کو مختلف بحرانوں اور مشکلات کا سامنا ہے۔ آج پاکستان کیلئے سب سے بڑا مسئلہ بجلی کی شدید قلت کا ہے مسلم لیگ ن کی حکومت اس سے نجات کیلئے ہر ممکنہ قدم اٹھانے کا ارادہ رکھتی ہے۔ پاکستان کے وسائل ہیں تو اسکے بااعتماد دوست چین کے پاس جدید ترین ٹیکنالوجی ہے جس سے استفادہ کر کے بجلی کے بحران سے نکلا جا سکتا اور دیگر شعبوں میں ترقی کی راہ ہموار ہو سکتی ہے۔ نورینکو کے چیئرمین وانگ ژی تونگ نے پانچ رکنی وفد کے ساتھ وزیراعظم میاں نواز شریف سے ملاقات کی۔ میاں نواز شریف نے بھی کمپنی کو پاکستان میں شمسی گھر لگانے اور کوئلہ سے بجلی پیدا کرنے کے منصوبے لگانے کی دعوت دی۔ مسلم لیگ ن نے اقتدار میں آتے ہی عوامی مفاد کے منصوبوں پر ترجیحی بنیادوں پر کام شروع کردیا ہے اس سے امید پیدا ہوئی ہے کہ اپنے پانچ سالہ اقتدار کے دوران وہ عوام کو زیادہ سے زیادہ ریلیف فراہم کرنے میں کامیاب ہو جائیگی۔