وزیراعظم کا ملک میں موٹر ویز کا جال بچھانے کا عزم

ایڈیٹر  |  اداریہ
 وزیراعظم کا ملک میں موٹر ویز کا جال بچھانے کا عزم

وزیراعظم میاں نواز شریف نے ملک میں موٹرویز کا جال بچھانے کا اعلان کیا ہے اور کہا ہے کہ ہمیں ماضی کی غلطیوں سے سبق سیکھنا چاہئے۔ گزشتہ روز کراچی میں کراچی، لاہور موٹروے کا سنگِ بنیاد رکھنے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ ہم لوگوں کے دلوں کو قریب لانا چاہتے ہیں۔ تمام صوبوں کو باہم ملانے کیلئے ملک بھر میں موٹر ویز کا جال بچھائیں گے۔ ہم گوادر سے وسطی ایشیا تک موٹروے بنانا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا مجھے یقین ہے اب وہ دن جلد آئیگا جب موٹر وے کے ذریعے گوادر سے پشاور اور وسطی ایشیا تک رسائی ملے گی جس سے ملک میں خوشحالی آئیگی۔
بلاشبہ موٹروے ملک میں خوشحال اور صحت مند معاشرے کی تشکیل کیلئے لائف لائن کی حیثیت رکھتی ہے اور اسی حوالے سے میاں نواز شریف نے اپنے گزشتہ دور حکومت میں لاہور سے اسلام آباد تک موٹروے کی بنیاد رکھی اور اس وقت کی اپوزیشن پیپلز پارٹی کی سخت مخالفت کے باوجود اس منصوبے کو پایہ تکمیل تک پہنچایا جب موٹروے کی افادیت سامنے آئی تو اسکے مخالفین کے بھی منہ بند ہو گئے اور محترمہ بینظیر بھٹو نے اقتدار میں آنے کے بعد ملکی ترقی کے اس منصوبے کو خود بھی آگے بڑھایا چنانچہ موٹروے اسلام آباد سے ہوتی ہوئی دوسرے مرحلہ میں پشاور تک جا پہنچی جبکہ میاں نواز شریف نے دوبارہ اقتدار میں آ کر موٹروے کے علاوہ نیشنل ہائی وے پر بھی توجہ دی اور لاہور سے ملتان تک اسے موٹروے کے مساوی بنا دیا جبکہ اب نیشنل ہائی وے کے ساتھ ساتھ وہ لاہور تا کراچی موٹر وے کا جال پھیلانے کے عزم پر بھی کاربند ہو چکے ہیں۔ اس سے شہریوں کو صرف سفر کی ہی بہترین سہولتیں نہیں ملیں گی بلکہ اس سے خطے کے دوسرے ممالک تک تجارتی راہداری بھی آسان ہو جائیگی۔ کراچی بندرگاہ کے بعد گوادر پورٹ کی تعمیر سے موٹروے کی اہمیت اور بھی بڑھ جائیگی جس سے خطے کے ممالک کی باہمی تجارت کیلئے آسانیاں پیدا ہوں گی تو ہماری معیشت بھی پھلنا پھولنا شروع ہو جائیگی اور روزگار کے بھی کئی نئے مواقع نکلیں گے۔ اس طرح قومی تعمیر و ترقی کے اس منصوبے سے ملک میں اقتصادی استحکام کے ساتھ ساتھ سیاسی استحکام کی بھی بنیاد پڑ جائیگی۔ حکومت کو یقیناً اس وقت دہشت گردی اور توانائی کے بحران جیسے بڑے چیلنجز کا سامنا ہے جس سے عہدہ برأ ہونے کے ساتھ ساتھ وزیراعظم موٹروے کے تیسرے مرحلے کی تکمیل کی جانب بھی گامزن ہیں تو قومی ترقی کے اس سفر میں کسی قسم کی رکاوٹیں پیدا نہیں ہونے دی جانی چاہئیں۔ حکومت کے مخالفین کی جانب سے ملک کی بہتری کے کسی منصوبے پر سیاست کرنا چنداں مناسب نہیں۔