وہاڑی ہسپتال میں 7 نومولود بچوں کی ہلاکت

ایڈیٹر  |  اداریہ
وہاڑی ہسپتال میں  7 نومولود بچوں کی ہلاکت

ڈی ایچ کیو ہسپتال کے چلڈرن وارڈ کے سٹاف کی مبینہ غفلت کی وجہ سے آکسیجن نہ ملنے کے باعث 7 نومولود بچے جاں بحق ہو گئے۔
مریض کی زندگی بچانے کیلئے ادویات اور ابتدائی طبی سہولیات کا ہونا بہت ضروری ہے۔ لیکن ڈی ایچ کیو وہاڑی ہسپتال کے چلڈرن وارڈ میں عملے کی مبینہ کوتاہی سے آئی سی یو وارڈ میں آکسیجن ختم ہونے سے 7 نومولود بچے جاں بحق ہو ئے۔ بچوں کے لواحقین نے جب ڈیوٹی پر عملے کا پتہ کیا تو عملہ کمروں میں سو رہا تھا۔ وزیراعلیٰ پنجاب نے بروقت نوٹس لیکر انکوائری کمیٹی تو تشکیل دے دی ہے لیکن دیگر انکوائریوں کی طرح یہ انکوائری بھی فائلوں میں دب جائیگی اور 7 بچوں کو موت کے منہ میں دھکیلنے والوں کو سزا نہیں مل سکے گی۔ محکمہ اس دفعہ کوتاہی برتنے والوں کو ضرور واقعی سزا دے۔سرکاری ہسپتالوں میں سیاسی مداخلت کے باعث شہری سارا دن ہسپتالوں میں خوار ہوتے رہتے ہیں۔ ڈاکٹرز کمروں سے باہر نکلتے ہی نہیں جبکہ اپنے ملازمین کے ذریعے مریضوں کو اپنے پرائیویٹ کلینکوں یا ہسپتالوں میں مہنگے داموں علاج کروانے کا کہا جاتا ہے۔ علم ہونے کے باوجود حکومت آج تک اس پر قابو نہیں پا سکی۔ بڑے بڑے ہسپتالوں میں ایم آئی آر‘ ویڈیو اینڈ و سکوپی‘ کالے یرقان‘ بون سکین ٹیسٹ کی سہولت میسر ہی نہیں اور بدقسمتی سے پنجاب میں توصحت کا کوئی وزیر ہی نہیں۔ سب سے اہم شعبے کو ایک مشیر کے ذریعے چلایا جا رہا ہے‘ حکومت پنجاب محکمہ صحت پر توجہ دے۔