جیو تھرمل سے سستی بجلی پیداکی جائے

ایڈیٹر  |  اداریہ
جیو تھرمل سے سستی بجلی پیداکی جائے

 معروف پاکستانی سائنس دان جاوید احمد نے کہا ہے کہ پاکستان میں سطح زمین کے نیچے بجلی پیدا کرنیوالے وسیع وسائل موجود ہیں جن کو بروئے کار لا کر ایک لاکھ میگاواٹ بجلی جیو تھرمل انرجی سے پیدا کر کے ملک کے اندر بجلی کا بحران چار برسوں میں ختم کیا جا سکتا ہے۔ دنیا بھر میں جیو تھرمل کے 800 پلانٹس رواں سال دنیا کے مختلف ممالک میں لگنے ہیں۔ اس کا طریقہ کار یہ ہے کہ زمین میں دو سوراخ کرکے ایک سے پانی کو زمین میں پمپ کیا جاتا ہے اور دوسرے سے بھاپ زمین پر آتی ہے جس سے ٹربائین کو چلایا جاتا ہے۔ گھریلو اور صنعتی ضروریات کیلئے توانائی کی ضرورت ایک اٹل حقیقت ہے۔ آج پاکستان میں جہاں توانائی کی شدید کمی ہے وہیں اسکی پیداواری لاگت بھی بہت زیادہ ہے۔ فرنس آئل کے استعمال سے فی یونٹ 24روپے لاگت آتی ہے۔جیو تھرمل سے پیدا کی جانیوالی بجلی کے اخراجات پن بجلی جتنے ہیں۔ امریکہ، جرمنی، چین، آسٹریلیا سمیت دیگر ترقی یافتہ ممالک میں جیو تھرمل انرجی پلانٹس لگ رہے ہیں۔ فلپائن 23% بجلی اسی ذریعے سے حاصل کرتا ہے۔جاوید احمدنے کہا ہے کہ اگر حکومت میرے ساتھ تعاون کرے تو 4 برسوں کے اندر بجلی کا بحران ختم کر سکتا ہوں، 4 سال میں 10 ہزار میگاواٹ بجلی جیو تھرمل پلانٹس سے پیدا کی جا سکتی ہے۔اول تو حکومت جاوید احمد کی خدمات سے استفادہ کرے ایسا نہیں کرناچاہتی تو وہ اس ٹیکنالوجی سے اپنے ماہرین کے ذریعے بجلی پیدا کرکے ملک کو توانائی کے بحران سے نکالنے کی کوشش کرے۔