آسٹریلیا کا مسئلہ کشمیر کے حل میں تعاون کا اعلان

ایڈیٹر  |  اداریہ
آسٹریلیا کا مسئلہ کشمیر کے  حل میں تعاون کا اعلان

کشمیر دیرینہ مسئلہ ہے پاکستان اور بھارت کو پرامن حل کیلئے راہ تلاش کرنی چاہیئے۔ حل میں مدد دینے کو تیار ہیں :آسٹریلوی وزیر خارجہ۔ پاکستان کیلئے 19ملین ڈالر کی امداد کا اعلان۔ سرینگر میں علی گیلانی کے گھر کا محاصرہ جاری۔ بھارتی فوج نے 25 مکانات جلا دیئے۔
امریکہ، چین اور اقوام متحدہ کے بعد اب آسٹریلوی وزیر خارجہ نے بھی مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے پاکستان اور بھارت کو مدد کی پیشکش کی ہے جس سے معلوم ہوتا ہے کہ طویل عرصہ سے جاری جدوجہد کے بعد کشمیریوں کی قربانیاں رنگ لا رہی ہیں اور عالمی برادری میں اقوام متحدہ کے اس فراموش کردہ مسئلہ کے حل کیکلئے خواہش بڑھتی جا رہی ہے۔ اب بھارت کو چاہیے کہ وہ بھی عالمی برادری کی اپیلوں پرکان دھرے۔بھارت کشمیر پہ اپنا غاصبانہ قبضہ برقرار رکھنے کیلئے بیہمانہ مظالم ڈھا رہا ہے حریت کانفرنس جو کشمیریوں کی مسلمہ نمائندہ تنظیم ہے کے رہنمائوں کو حراست میں یا گھروں میں نظر بند رکھا جا رہا ہے۔ انسانی حقوق اور عوامی آزادیاں وہاں سلب ہیںآ ئے روز کشمیریوں کی ہلاکتوں کے ساتھ ان کے مال و اسباب کی تباہی کی داستانیں سامنے آتی رہتی ہیں۔ ان حالات میں حکومت پاکستان کو چاہیے کہ وہ مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے اپنی سفارتی سرگرمیاں تیز کرے اور عالمی سطح پر تمام بڑی طاقتوں اور بااثر ممالک کو رضا مند کرے کہ وہ مسئلہ کشمیر اقوام متحدہ کی منظور شدہ قراردادوں پر عمل درآمد یقینی بنائیں تاکہ کشمیری اپنے مستقبل کا فیصلہ خود کر سکیں اور برصغیر میں قیام امن کی راہ ہموار ہو۔