برطانوی سرمایہ کاروں کی سی پیک اور پنجاب میں سرمایہ کاری میں دلچسپی

ایڈیٹر  |  اداریہ
برطانوی سرمایہ کاروں کی سی پیک اور پنجاب میں سرمایہ کاری میں دلچسپی

وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف سے لندن کے میئر صادق خان کی سربراہی میںبرطانوی سرمایہ کاروں کے وفدنے ملاقات کی جس میں برطانوی سرمایہ کاروں نے سی پیک کے منصوبوں میں سرمایہ کاری میںدلچسپی کا اظہار کیا۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ سی پیک نے پاکستان میں غیر ملکی سرمایہ کاری کے نئے دروازے کھولے ہیں۔برطانوی سرمایہ کار سی پیک کے منصوبوں میں سرمایہ کاری کرکے فائدہ اٹھائیں۔سی پیک کے منصوبوں میں برطانوی سرمایہ کاروں کو خوش آمدید کہیں گے۔مئیر لندن صادق خان نے کہا کہ لندن اورلاہور کے مابین تعلقات بہت اچھے ہیں اورہم لاہور کے ساتھ مختلف شعبوں میں تعاون اورسرمایہ کاری کوبڑھانا چاہتے ہیں۔
دہشت گردی کے ناسور اور توانائی کی قلت کے باعث بیرونی سرمایہ کاروں نے پاکستان کیا آنا تھا پاکستانی سرمایہ کار بھی اپنے کاروبار بیرون ممالک منتقل کرنے لگے۔ اب ملک میں توانائی کا بحران اور لوڈشیڈنگ تقریباً ختم ہو گئی، حکومتی دعووں کے مطابق بجلی کی پیداوار ضرورت سے بھی زیادہ ہے جبکہ ایل این جی کی درآمد سے گیس کی کمی کی شدت بھی کم ہوئی ہے جبکہ دہشت گردی میں نمایاں کمی آئی ہے، پاکستان کے معاشی حب کراچی کے حالات بہتر ہوئے ہیں۔ملکی اور غیرملکی سرمایہ کاروں کیلئے پاکستان میں کاروبار کے حالات سازگار ہیں۔ سی پیک منصوبہ گیم چینجر کی حیثیت رکھتا ہے، اس میں علاقائی ممالک کے ساتھ ساتھ عرب اور یورپی یونین کے ممالک نے بھی دلچسپی ظاہر کی ہے۔ اٹھارہویں ترمیم کے بعد صوبوں کو دوسرے ممالک کے ساتھ معاہدوں کی اجازت دی گئی جس سے فائدہ اٹھاتے ہوئے پنجاب حکومت صحت، تعلیم اور تجارت کے شعبوں میں معاہدے کر رہی ہے۔ وزیراعلیٰ پنجاب نے جہاں برطانوی سرمایہ کاروں کو پنجاب میں سرمایہ کاری کی دعوت دی وہیں سی پیک میں شرکت کی بھی دعوت دی ہے۔ برطانوی سرمایہ کاروں نے سی پیک سمیت کئی منصوبوں میں سرمایہ کاری میں دلچسپی ظاہر کی جس سے پاکستان کی معیشت پر یقیناً مثبت اثرات مرتب ہونگے۔