معذوروں کا اب سرکاری ملازمتوں میں 5 فیصد کوٹے کا تقاضا

ایڈیٹر  |  اداریہ
معذوروں کا اب سرکاری ملازمتوں میں 5 فیصد کوٹے کا تقاضا

پنجاب کے مختلف اضلاع سے آنیوالے گونگے بہرے افراد نے پنجاب اسمبلی کے باہر احتجاجی مظاہرہ کیا۔ اُن کا مطالبہ تھا کہ انہیں سرکاری ملازمتوں میں 5 فیصد کوٹہ دیا جائے۔
پنجاب حکومت گزشتہ کئی ماہ سے احتجاجی مظاہروں کا سامنا کررہی ہے جس سے اُس کی مجموعی ساکھ نہایت کمزور ہوگئی ہے۔ مختلف عوامی طبقوں سے اُٹھنے والا احتجاج کا شور حکومت پنجاب کیلئے دردِ سر بن چکا ہے ‘ اسکے باوجود حکومت ہوش مندی کا مظاہرہ کرتی نظر نہیں آتی۔ گزشتہ روز پنجاب اسمبلی کے سامنے گونگے اور بہرے افراد کا اپنے حقوق کیلئے مظاہرہ انکے سابقہ احتجاج ہی کی کڑی تھی اس لئے انکے مسائل کا ایسا مستقل حل نکالنا چاہیے کہ انہیں بار بار احتجاج کیلئے سڑکوں پر نہ آنا پڑے تاہم اس امر کا کھوج لگانا بھی ضروری ہے کہ ملازمتوں میں دو فیصد کوٹہ کا مطالبہ منظور ہونے کے بعد کہیں وہ حکومت کے مخالف عناصر کی انگیخت پر تو اب پانچ فیصد کوٹے کا مطالبہ نہیں کررہے۔ حکومت پنجاب اس وقت سیاسی لحاظ سے نازک مرحلے سے گزر رہی ہے، ایسے میں آئے دن کے احتجاج حکومتی ساکھ کو مزید خراب کرنے کا باعث بن سکتے ہیں، پنجاب حکومت کو اس ضمن میں ذمہ داری اور سنجیدگی کا ثبوت دینا ہوگا۔ بلاشبہ معذور افراد معاشرے کی اہم افرادی قوت کا درجہ رکھتے ہیں، اُن کاپورا پورا حق ہے کہ انہیں انکی اہلیت کی بنیاد پر قومی دھارے میں شامل کیا جائے تاکہ وہ بھی اپنے بال بچوں کا پیٹ پال سکیں اور مہنگائی کے اس دور میں انہیں بھی جینے کا سامان میسر آسکے۔اگر سرکاری ملازمتوں میں معذوروں کیلئے پانچ فیصد کوٹے کی گنجائش نکل سکتی ہے تو ان کا یہ مطالبہ تسلیم کرلیا جائے یا حکومت کی مجبوریوں پر انہیں قائل کیا جائے تاکہ انکے آئے روز کے مظاہروں کی نوبت نہ آئے۔ حکومت کو چاہیے کہ سرکاری ملازمتوں میں اُنہیں 5 فیصد کوٹہ فراہم کرے۔ اگر حکومت ایسا نہیںکرتی تو سیاسی ناقدین کو یہ کہنے کا جواز ملے گا کہ حکومت مخالف پارٹیاں اِن طبقوں کو اپنے مقاصد کیلئے استعمال کررہی ہے لہٰذا حکومت ِ پنجاب اس تاثر کو زائل کرنے کیلئے فوراً معذور افراد کے مطالبے کو پورا کرکے ذمہ داری کا ثبوت دے۔