سویڈن نے فلسطین کو آزاد ریاست تسلیم کر لیا

ایڈیٹر  |  اداریہ
سویڈن نے فلسطین کو آزاد ریاست تسلیم کر لیا

سویڈن کے نئے وزیراعظم سلیفن لیوفوین نے کہا کہ ان کا ملک فلسطین کو آزاد ریاست تسلیم کر لے گا۔ گزشتہ روز پارلیمنٹ کے اجلاس کے دروان خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ دو آزاد اور خودمختار ممالک کے طورپر اسرائیل اور فلسطین ساتھ ساتھ اور پُرامن طورپر رہیں۔فلسطین کے وجود کو ختم کرنے کیلئے اسرائیل نے ایڑھی چوٹی کا زور لگا رکھا ہے۔ حال ہی میں چند افراد کے اغوا کا ڈرامہ رچا کر اسرائیل نے فلسطین کو کھنڈرات میں تبدیل کیا۔ اب فلسطین آثار قدیمہ کا منظر پیش کر رہا ہے۔ دنیا میں کسی غیر مسلم ملک کا مسئلہ ہو تو پورا یورپ اکٹھا ہوکر اسے آزاد کرانے کی کوشش کرتا ہے‘ لیکن سالہاسال سے مسلم ممالک ظلم و ستم کی چکی میں پس رہے ہیں۔ انہیں ان کا کبھی خیال نہیں آیا۔ سویڈن نے حقائق کو مدنظر رکھتے ہوئے فلسطین کو آزاد ریاست تسلیم کر لیا ہے جو خوش آئند ہے کیونکہ فلسطین نہ تو کسی ملک کی سرزمین پر قبضہ کرکے معرض وجود میں آیا ہے نہ ہی وہ کوئی ایسے عزائم رکھتا ہے۔ وہ تو 1948ءسے بھی پہلے کا دنیا کے نقشے پر موجود ہے۔ دنیا بھر کے ممالک اگر قابض اسرائیل کو آزاد ملک تسلیم کرتے ہیں تو فلسطین کو آزاد ریاست تسلیم کرنے میں انہیں کیا رکاوٹ ہے۔ سویڈن کی تقلید کرتے ہوئے دنیا بھر کے ملک فلسطین کو بطور آزاد ریاست تسلیم کریں تاکہ اس خطے میں بے گناہ انسانوں کی قتل و غارت گری بند ہو سکے۔