دہشت گردی پر قابو پا کر ہی معیشت مضبوط کی جا سکتی ہے

ایڈیٹر  |  اداریہ

وزیراعظم میاں نواز شریف نے کہا ہے پاکستان کو دہشت گردی، فرقہ واریت، بجلی و معاشی بحران اور وسائل کی کمی جیسے بڑے بڑے چیلنجز کا سامنا ہے جس کو باہمی تعاون سے حل کیا جائے گا۔ وزیراعظم میاں نواز شریف اقتدار سنبھالتے ہی معیشت کی بہتری کیلئے سرتوڑ کوششیں کررہے ہیں اس سلسلے میں انہوں نے چین کا دورہ کیا اور توانائی بحران کے حل کیلئے وہاں کی کمپنیز اور حکومت سے معاہدے کئے، انہیں تحفظ فراہم کرنیکی یقین دہانی کرائی بلکہ چائینز کمپنیوں کو پاکستانی بیورو کریسی کے عدم تعاون پر انہیں ذاتی نمبر فراہم کیا، یہ ساری گارنٹیاں دینے کا مقصد یہی تھا کہ پاکستان کی معیشت بہتر ہو سکے۔ میاں نواز شریف کا یہ کہنا حقیقت پر مبنی ہے کہ معیشت بہتر ہو گی تو دہشت گردی نہیں ہو گی، ملک میں خوشحالی آئے گی تو قتل و غارت کا کاروبار تھم جائے گا لیکن وزیراعظم کو ماضی کے دریچوں میں جھانک کر دیکھنا چاہئے کہ پہلے معیشت خراب کس وجہ سے ہوئی ہے؟ دہشت گردی کے ناسُور نے ہی ہماری معیشت کا بیڑہ غرق کیا ہے۔ اگر قتل و غارت پر قابو پا کر حالات کو پُرامن بنایا جائے تو معیشت جلد بہتر ہو گی لہٰذا میاں نواز شریف کو سب سے پہلے دہشت گردی پر قابو پا کر عوام کو پُرامن ماحول فراہم کرنا چاہئے تاکہ وہ بے خوف و خطر زندگی گزار کر معیشت کو مضبوط کر سکیں۔