پرویز مشرف کو واپس آکر مقدمات کا سامنا کرنا چاہئے

پرویز مشرف کو واپس آکر مقدمات کا سامنا کرنا چاہئے


آل پاکستان مسلم لیگ کے سربراہ و سابق صدر پرویز مشرف نے کہا ہے کہ نگران حکومت کے قیام کے ٹھیک ایک ہفتے کے بعد پاکستان آجا¶ں گا۔ پاکستان جا کر عدالتوں کا سامنا کرنے کو تیار ہوں۔
سابق صدر پرویز مشرف پاکستانی ہیں۔ واپس ملک میں آنا ان کا حق ہے۔ انہیں واپس لازمی آنا چاہئے۔ ان پر جو بھی الزامات ہیں۔ انہیں عدالتوں میں جا کر کلیئر بھی کروانے چاہئیں۔ ماضی میں انہوں نے جو جو کام کئے ہیں ملک میں آکر انہیں انکا جواب دینا چاہئے۔ لال مسجد اور اکبر بگٹی قتل کیس میں وہ نامزد ہیں۔ بےنظیر بھٹو کیس میں بھی عدالت نے انہیں اشتہاری قرار دے رکھا ہے۔ انہیں ان تمام کیسز کا سامنا کرنا چاہئے۔ دوبئی بیٹھ کر وہ کہتے ہیں کہ میرا ان سے تعلق نہیں۔ جبکہ مدعیوں نے انہیں نامزد کر رکھا ہے۔ لہٰذا واپس آکر انہیں ان تمام الزامات کے جوابات دینے چاہئیں۔ جو ان پر لگے ہوئے ہیں پہلے بھی پرویز مشرف نے واپسی کا اعلان کیا تھا لیکن واپس نہیں آئے اب انہیں پہلے کی طرح نہیں کرنا چاہئے بار بار تاریخ دینے سے ان کی اپنی ساکھ متاثر ہو رہی ہے۔ لہٰذا انہوں نے جو تاریخ دی ہے اس پر انہیں واپس آجانا چاہئے۔