پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کا اعلان


پٹرول 77 پیسے، ہائی سپیڈ ڈیزل 62 پیسے، مٹی کا تیل 1.64 روپے اور لائٹ ڈیزل 1.50 روپے سستا ہو گیا۔ اوگرا نے وزارت خزانہ کی جانب سے منظوری کے بعد پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا۔ شہریوں کی طرف سے معمولی کمی پر مایوسی کا اظہار۔ گزشتہ حکومت کے 5 سالہ دور میں یہ مذاق متواتر عوام کے ساتھ ہوتا رہا کہ پٹرولیم کی قیمتوں میں اضافہ تو روپوں کی شکل میں کیا جاتا مگر ان میں کمی چند پیسوں میں کی جاتی، یہی صورتحال موجودہ نگران حکومت کے دور میں بھی برقرار رکھی گئی ہے۔ عوام توقع کر رہے تھے کہ نگران حکومت انکی مشکلات کا احساس کرتے ہوئے پٹرولیم کی مصنوعات میں مناسب کمی کریگی جس کی اطلاعات بھی موصول ہو رہی تھیںمگر ”اے بسا آرزو کہ خاک شد“ یہ توقع پوری نہ ہو سکی اور سابقہ حکومت کے نقش قدم پر چلتے ہوئے عوام کے ساتھ وہی بھیانک مذاق کیا گیا ہے۔ پیسوں کے حساب سے پٹرولیم نرخوں میں کمی کا عوام کو فائدہ ہو گا کیونکہ اس وقت ملک میں پیسے کے سکے کی کوئی ویلیو ہی نہیں۔ 5 روپے تک کا سکہ بے وقعت ہو چکا ایک روپے کے سکے کو اس دور میں کوئی نہیں پوچھتا تو ایسے میں پیسہ کا سکہ کہاں دستیاب ہو گا۔ نگران حکومت اگر واقعی عوام کو ریلیف دینا چاہتی ہے تو اسے حقیقی معنوں میں قیمتوں میں کمی کر کے دکھانا ہو گی۔ جس کا انہوں نے عوام سے وعدہ بھی کیا ہے۔