شہدائے جموں و کشمیر کو خراج تحسین

صحافی  |  طاہر منیر طاہر
شہدائے جموں و کشمیر کو خراج تحسین

شہید کشمیر ”مقبول بٹ نے کہا تھا کہ میں کشمیر میں ظلم، جبر، غلامی، استحصال منافقت، دولت پسندی اور فرسودگی کے خلاف بغاوت کا مرتکب ہوا ہوں۔ شہید کشمیر کے یہی خصوصیات تھیں جو ظالموں اور جابروں کو پسند نہ آئیں اور انہیں ابدی نیند سلا دیاگیا۔ مقبول بٹ توشہیدہو گئے لیکن اپنے خون سے آزادی کا وہ دیا جلا گئے جو آج بھی جل رہا ہے۔ مقبول بٹ کو ہم سے جدا ہوئے 31 برس بیت چُکے ہیں لیکن اس عظیم شہید کشمیر کی یاد آج بھی ہمارے دلوں میں زندہ ہے اور زندہ رہے گی۔ حصول آزادی کے لئے شہید مقبول بٹ نے جو قربانی دی جو رائیگاں نہیں جائے گی۔ان کا خون رنگ لائیگا اور کشمیر انشاءاللہ آزاد ہو گا۔ ان خیالات کا اظہار شہید کشمیر مقبول بٹ کی 31 ویں برسی کے موقع پر شارجہ میں منعقدہ دو تقریبات کے دوران کیا گیا۔ دونوں علیحدہ علیحدہ تقریبات کا اہتمام جموں و کشمیر لبریشن فرنٹ اور سٹوڈنٹس لبریشن فرنٹ کے ارکان نے کیا تھا۔ متذکرہ دونوں تقریبات میں کثیرتعداد میں کشمیریوں نے شرکت کی جن میں عبدالرحمٰن، عبدالحمید بٹ، انور خان، شفیق مغل، سردار اشتیاق سردار نیاز کشمیری، راجہ اسد، سردارجاوید یعقوب، حافظ صدیق، بابر عزیز ، سردار ایاز، سردار بشارت، گل فراز، محمود بٹ، ادریس بٹ، مقصود الحق، اسحاق، شہریار، ملک عبداللہ اور سردار انور کے علاوہ بہت سے لوگ شامل تھے۔
اس موقع پر مقررین نے تقریر کرتے ہوئے کہا کہ بھارت نے گذشتہ عرصہ 66 سال سے کشمیر پر غاصبانہ قبضہ کر رکھا ہے اور کشمیریوں کے حق آزادی کو دبا کر رکھا ہوا ہے۔ کشمیریوں کی ہر تحریک آزادی کو بری طرح کچلا جا رہا ہے۔ بھارتی فوج نے مقبوضہ کشمیر میں ظلم و ستم ڈھا رہی ہے۔ لیکن پھر بھی کشمیریوں کا جذبہ آزادی جواں ہے اور وہ کسی ظلم و ستم کو خاطر میں نہ لاتے ہوئے آزادی کے لئے قربانیاں دے رہے ہیں۔ آزاد کشمیر کے لئے مقبول بٹ شہید کی قربانی کبھی فرموش نہ کی جا سکے گی۔ اس طرح دیگر شہداءکی قربانیاں بھی ضرور رنگ لائیں گی اور کشمیر بہت جلد بھارتی تسلط سے آزاد ہو گا۔