تیس سالہ خدمات کے بعد الوداعی پارٹی

صحافی  |  طاہر منیر طاہر

 جب سے متحدہ عرب امارات کا قیام ظہور پذیرہوا ہے تب سے پاکستانی یہاں بسلسلہ روزگار موجود ہیں اور مختلف شعبوں میں اپنی خدمات سرانجام دے رہے ہیں۔یہاں مختلف شعبہ ہائے زندگی میں پاکستانیوں نے خاصا نام پیدا کیا ہے جو لوگوں کیلئے مثال بن گیا ہے جبکہ پاکستانیوںکی یو اے ای کیلئے بہترین کاوشوں کو مختلف موقعوں پر مقامی شیوخ نے بھی سراہا ہے۔ یہ بات تو اٹل ہے کہ لوگ کسی کو اس کے کام کی وجہ سے یاد رکھتے ہیں لہٰذا ہر شخص جو درد دل اور شعور رکھتا ہے وہ کسی بھی جگہ اپنے قیام کو یادگار بنانے کی کوشش کرتا ہے تاکہ لوگ اُسے جانے کے بعد بھی یاد کریں۔
گزشتہ دنوںممتاز سماجی شخصیت احسان الٰہی کے اعزاز میں ایک خصوصی تقریب کا اہتمام ہوا جس کا انتظام و انصرام پاکستان بزنس کونسل دوبئی کے ڈائریکٹر تنویر الاسلام خواجہ نے کیا تھا۔اس تقریب میں پاکستانی کمیونٹی امارات کی چیدہ چیدہ شخصیات روزنامہ الشرق کے ایڈیٹر محمد راشد ملک، میاں محمد ابراہیم،سعید انور حیات، عبدالغفار فیضی،قاسم پردیسی،سلیم تایانی، الشرق کے گروپ چیف ایگزیکٹو محمدعاطف ملک،قونصلر طارق محمود،قونصلر معاذ نیازی،ملک عبدالسلام ڈاکٹر اے ہدیٰ شاہ، سامی احمد، نعیم احمد،محمد فاضل، اعجاز احمد،ممتاز مسلم اور عمر مکلائی کے علاوہ دیگر شخصیات نے بھی شرکت کی۔جناب احسان الٰہی کے اعزاز میں ان کی پاکستانی کمیونٹی کے لئے تیس سالہ خدمات کے اعتراف میں الوداعی عشائیہ میں خواجہ تنویر الاسلام، عبدالغفار فیضی اور سعید انور حیات نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جناب احسان الٰہی نے دوبئی میں اپنے تیس سالہ قیام کے دوران پاکستانی کمیونٹی کی فلاح و بہبود کیلئے گرانقدر خدمات سرانجام دی ہیں جنہیں کبھی بھی فراموش نہیں کیاجاسکے گا۔تقریب کے شرکاءنے احسان الٰہی کی خدمات کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ وہ انتہائی دیانت دار بینک افسر رہے ہیںجس کے سچے اور کھرے پاکستانی کی حیثیت سے بلا تفریق ہر طبقہ فکر کے پاکستانیوںکی فلاح و بہبود کیلئے کام کیا ہے۔احسان ایک عرصہ تک پاکستان ایسوسی ایشن دبئی کے صدر اور دس سال تک ویلفیئر کمیٹی کے ممبر بھی رہے۔آپ زیر نگرانی دبئی میں ایک دینی مدرسہ بھی کام کر رہا ہے یہاں سے ہر ماہ تین چار بچے حافظ قرآن بن کر نکلتے ہیں۔ احسان اللہ صاحب کی بے شمار یاد رہنے والی باتیں اور یادیں ہیں جو ان کے دوستوں کے مابین ہمیشہ یاد رہیں گی اور ان کی یاد دلاتی رہیںگی۔