موٹر رجسٹریشن برانچوں میں بغیر ”نذرانہ“ کام کروانا مشکل ہو گیا

لاہور (نامہ نگار) محکمہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن کی موٹر رجسٹریشن برانچوں میں رشوت دیئے بغیر کام کرانا ناممکن ہو گیا ہے افسران و عملہ نے ملی بھگت کرکے گاڑیوں کی رجسٹریشن، ٹرانسفر، ڈوپلیکیٹ، کمرشل ٹوکن ٹیکس سمیت ہر کام کے ریٹ مقرر کر رکھے ہیں تفصیلات کے مطابق محکمہ ایکسائز کی موٹر برانچ فرید کورٹ روڈ اور ڈیفنس میں گاڑیوں و موٹرسائیکلوں کی رجسٹریشن کیلئے آنے والے شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے محکمہ ایکسائز کے افسران و عملہ کو رشوت دیئے بغیر کوئی کام نہیں ہوتا گاڑی کی رجسٹریشن کے 1 ہزار روپے جبکہ موٹرسائیکل کے 3 سو روپے اضافی وصول کئے جا رہے ہیں رشوت نہ دینے والے سائیکلین کو عملہ اعتراض لگاکر ٹرخا دیتا ہے جس کے بعد سائلین کیلئے آئے روز محکمہ کے چکر لگانا مقدر بن جاتا ہے اس کے علاوہ سائلین کو اپنا نام کرانے کیلئے مجبوراً ایجنٹوں سے رابطہ کرنا پڑتا ہے ۔