راولپنڈی : خاتون شوہر اور دو بچوں کو قتل کر کے پھندے سے جھول گئی‘ فیصل آباد : ماں نے تین بچوں کو زہر دے کر خودکشی کر لی

راولپنڈی : خاتون شوہر اور دو بچوں کو قتل کر کے پھندے سے جھول گئی‘ فیصل آباد  : ماں نے تین بچوں کو زہر دے کر خودکشی کر لی

راولپنڈی+ فیصل آباد (اپنے سٹاف رپورٹر سے + نمائندہ خصوصی) راولپنڈی کے علاقے چکلالہ سکیم تھری میں خاتون نے اپنے شوہر اور دو بچوں کو زہر دے کر قتل کرنے کے بعد خود کو گلے میں پھندا لگا کر خودکشی کر لی‘ خودکشی سے قبل عورت نے اپنے خاوند کے بہنوئی کو فون کر کے اطلاع دی کہ میں نے اپنے خاوند اور اپنے بچوں کو زہر پلا دیا ہے اب خود بھی جان کا خاتمہ کر رہی ہوں آ کر ہماری نعشیں سنبھال لینا۔ جبکہ فیصل آباد میں گھریلو جھگڑے پر خاتون نے اپنے 3 بچوں کو زہر دے کر خودکشی کرلی۔ تفصیلات کے مطابق بچوں کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے۔ پولیس نے بتایا کہ مقتول شاہد عباس نے کچھ عرصہ قبل شاہدہ نامی عورت کے ساتھ شادی کی‘ یہ دونوں کی دوسری شادی تھی جبکہ ان کا پہلی شادی سے 6 سالہ بیٹا عادل اور موجودہ شادی سے چھ ماہ کی بچی عرشیہ فاطمہ تھیں۔ میاں بیوی ڈیڑھ سال سے اس علاقے میں کرائے کے چھوٹے سے گھر میں رہائش پذیر تھے۔ محلہ داروں کے مطابق میاں بیوی میں اکثر جھگڑا رہتا تھا۔ وقوعہ کی شب شاہدہ نے پہلے اپنے خاوند اور بچوں کو زہر پلایا اور پھر ان کے گلے دبائے جبکہ بعدازاں چھت کے کنڈے سے پھندا لگا کر خود بھی جھول گئی‘ پولیس نے متوفین کی نعشوں کو قبضے میں لے کر ڈی ایچ کیو منتقل کر دیں۔ ابتدائی تفتیش میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ شاہدہ کا شوہر مبینہ طور پر تیسری شادی کرنا چاہتا تھا جس پر میاں بیوی میں اکثر لڑائی جھگڑا ہوتا تھا۔ادھر سمندری کے نواحی علاقے میں گھریلو جھگڑے پر خاتون نے اپنے تین بچوں کو زہر دے کر خودکشی کر لی۔ ڈاکٹروں کے مطابق بچوں کی حالت تشویشناک ہے جبکہ راولپنڈی میں خاتون نے اپنے شوہر اور 2 بچوں کو زہر دے کر قتل کرنے کے بعد خود کو گلے میں پھندا لگا کر زندگی کا خاتمہ کر لیا۔ تفصیلات کے مطابق تھانہ سٹی سمندری کے علاقے لطیف نگر کے محمود اختر نے اپنے 10 سالہ بیٹے عبدالرحمان کو ڈانٹ ڈپٹ کی تھی جس پر محمود اختر اور اس کی اہلیہ مسرت بی بی میں تلخ کلامی ہوئی جس پر دلبرداشتہ ہو کر مسرت بی بی نے دودھ میں گندم والی گولیاں ڈال کر اپنے بچوں عبدالرحمان۔ 12سالہ نگار اور 8 سالہ بیٹی مناحل کو پلا دیا۔ تشویشناک حالت میں قریبی ہسپتال لایا گیا جہاں ڈاکٹروں نے ماں اور اس کے تین بچوں کو سول ہسپتال منتقل کر دیا ہے۔ دوران علاج مسرت بی بی چل بسی جبکہ تینوں بچوں کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے۔ کامونکے سے نامہ نگار کے مطابق محلہ رضا آباد میں غربت اور تنگدستی سے دلبرداشتہ شادی شدہ نوجوان ساجد نے زہریلی گولیاں کھا کر زندگی کا خاتمہ کرلیا۔