پسند کی شادی کرنے والی لڑکی کو ہراساں نہ کرنے کی ہدایت

لاہور (اپنے نامہ نگار سے) پسند کی شادی کرنے والی لڑکی نے تحفظ کے حصول کے لئے عدالت سے رجوع کر لیا۔ تفصیلات کے مطابق ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج طارق محمود ضرغام کی عدالت میں دائر درخواست میں چونگی امرسدھو کی رہائشی فیاض مائی نے موقف اختیار کیا کہ میں نے اپنی مرضی سے 23نومبر کو اللہ رکھا سے پسند کی شادی کی میرے والد اور بھائی لالچی ہیں وہ میری شادی کہیں اور کرنا چاہتے تھے اب وہ مجھے ہراساں کر رہے ہیں اور دھمکیاں دے رہے ہیں کہ اپنے شوہر سے طلاق لو، 24نومبر کو میرے باپ اوربھائی کے ساتھ مل کر ایس ایچ او فیکٹری ایریا نے ہمارے گھر رات 9بجے ریڈ کی اورمجھے میرے خاوند اورمیرے سسرال والوں کو بلاوجہ ہراساں کیا اور مجھے دھمکیاں دیں کہ اپنے شوہر سے طلاق لو ورنہ جان سے مار دینگے۔ فاضل عدالت نے ایس ایچ او فیکٹری ایریا کو حکم دیا کہ وہ سائلہ کو بلاوجہ ہراساں نہ کرے۔