لاہور‘ گوجرانوالہ سمیت متعدد شہروں میں 20 مجرموں کو آج پھانسی ہوگی

لاہور‘ گوجرانوالہ سمیت متعدد شہروں میں 20 مجرموں کو آج پھانسی ہوگی

لاہور + فیصل آباد (سٹاف رپورٹر+ نمائندہ خصوصی+ نامہ نگاران+ایجنسیاں) لاہور سمیت پنجاب کی جیلوں میں آج مجموعی طور پر 20 سزائے موت کے قیدیوں کو پھانسی کی سزائیں دی جائیں گی۔ جیلوں کی انتظامیہ کی جانب سے انتظامات مکمل کرلئے گئے ہیں اور قیدیوں کی انکے عزیز و اقارب سے آخری ملاقات بھی کروا دی گئی ہے۔ تفصیلات کے مطابق لاہور میں سزائے موت کے 4 مجرموں کی سزا پر عملدرآمد کیلئے ڈیتھ وارنٹ کوٹ لکھپت جیل لاہور کو موصول ہو گئے جس کے مطابق مجرموں اللہ رکھا، غلام نبی، رضوان اور معظم خان کو آج ( منگل ) 21 اور کل 22 اپریل کو تختہ دار پر لٹکایا جائیگا۔ اس حوالے سے سکیورٹی سمیت دیگر انتظامات مکمل کر لئے گئے ہیں اور مجرموں کی اہل خانہ سے آخری ملاقاتوں کا سلسلہ بھی جاری ہے ۔ قتل کے 4 مجرموں میں معروف شخصیت سیٹھ عابد کے بیٹے کا قاتل بھی شامل ہے۔ مجرم اللہ رکھا نے مصطفی آباد قصور میں شہری طفیل کو قتل کر دیا تھا ، غلام نبی نے لاہور کے علاقہ مزنگ میں ایک شخص مختار احمد بٹ کو موت کے گھاٹ اتار دیا تھا۔ رضوان نے معروف شخصیت سیٹھ عابد کے بیٹے سمیت 5 افراد کو قتل کیا تھا جبکہ معظم خان نے 1995ء میں ناصر اقبال نامی شخص کو قتل کر دیا تھا۔ علاوہ ازیں سنٹرل جیل ملتان میں قتل کے مجرم کو آج صبح پھانسی پر لٹکایا جائیگا۔ قیدی سلطان کا تعلق خانیوال سے ہے جس نے 2000 میں شریف نامی ایک شہری کو موت کے گھاٹ اتار دیا تھا۔ پسرور میں طالبہ سے زیادتی کرنیوالے مجرموں عابد مقصود اور ثنااللہ کو آج صبح ڈسٹرکٹ جیل سیالکوٹ میں تختہ دار پر لٹکا دیا جائیگا۔ دریں اثنا 6 مئی1999 ء کو گائوں علاول پور میں 12 سالہ طالبہ سے زیادتی کا ارتکاب کرنے والے مجرموں سلیم اور لقمان کو 22 اپریل کو ڈسٹرکٹ جیل سیالکوٹ میں تختہ دار پر لٹکا دیا جائیگا۔ پاکپتن کے گائوں عارفوالہ کے نواحی گائوں 35ای بی کے رہائشی لیاقت کھوکھر نے 17سال قبل 1998ء میں اپنے ماموں مقتول محمد بلال کو قتل کیا تھا اسے آج پھانسی دی جائیگی۔ سنٹرل جیل بہاولپور میں سزائے موت کے مجرم نذیر احمد اور شمیر کو آج پھانسی دی جائیگی۔ دوسری طرف سپریم کورٹ نے تہرے قتل کے مرتکب سزائے موت کے قیدی کے ڈیتھ وارنٹس کے خلاف اپیل خارج کردی، مجرم راجہ رئیس کو آج اڈیالہ جیل راولپنڈی میں پھانسی پر لٹکایا جائیگا جبکہ گوجر خان میں کم عمری اور وارثوں میں راضی نامے کی بنیاد پر قیدی مرزا سرفراز کی پھانسی پر عملدرآمد روکدیا گیا ہے۔گوجرانوالہ سے نمائندہ خصوصی کے مطابق سزائے موت کے تین مجرموں کو آج پھانسی دی جائیگی۔ مجرم عنایت نے 2002ء میں دیرینہ دشمنی پر خاندان کے 7 افراد کو قتل کیا تھا جبکہ مجرم ظفر اور لطیف نے 1995ء میں معمولی تنازع پر چار افراد کو قتل کیا تھا۔ مجرموں کی انکے لواحقین سے آخری ملاقاتیں کروا دی گئی ہیں۔علاوہ ازیں گجرات میں 1، فیصل آباد میں 4 اور ساہیوال میں بھی 2 قیدیوں کو پھانسی دی جائیگی۔