حکومت دہشت گردوں کے خلاف فی الفور آپریشن کرے: صاحبزادہ حامد رضا

لاہور (خصوصی نامہ نگار) سنی اتحاد کونسل پاکستان کے چیئرمین صاحبزادہ حامد رضا نے کہا ہے کہ حکومت مذاکرات کی رَٹ چھوڑ کر ریاست مخالف دہشت گردوں کے خلاف فی الفور آپریشن شروع کرے کیونکہ اب پانی سر سے گزرنے لگا ہے اور ملکی سلامتی شدید خطرات سے دوچار ہو چکی ہے۔ سکیورٹی فورسز پر بڑھتے حملے وفاقی وزیرداخلہ کی کھلی ناکامی ہیں۔ بنوں دھماکے میں 22سکیورٹی اہلکاروں کی شہادت پر وفاقی وزیرداخلہ استعفیٰ دیں اور حکومت کسی اہل اور جرأت مند شخص کو وزیرداخلہ مقرر کرے کیونکہ چوہدری نثار علی اس عہدے کے اہل نہیں۔ حکومت کی کمزوری کی وجہ سے سکیورٹی فورسز پر حملوں میں اضافہ ہو گیا ہے۔ دفاعی اداروں پر آئے روز حملوں کے باوجود حکومت مصلحتوں اور خوف میں مبتلا ہے۔ دہشت گرد دفاعی اداروں کو مفلوج کرنے پر تلے ہوئے ہیں اور پوری قوم شدید عدم تحفظ کا شکار ہے۔ دہشت گردی کی آگ میں جلتے پاکستان کو قومی اتحاد کی ضرورت ہے۔ دہشت گردی کے ایشو پر اپنی اپنی بولیاں بولنے کی بجائے پوری قوم اور پوری قومی قیادت کو ہم آواز ہونا چاہیے۔ دہشت گردی کے ایشو پر پارلیمنٹ میں گریٹ ڈیبیٹ کروائی جائے۔ دہشت گردوں کے حامی اور ان کے ہم مسلک علماء انہیں ہتھیار پھینکنے پر آمادہ کریں۔ حکومت ریاست کی رٹ قائم کرنے کے لیے ہر ممکن قدم اٹھائے۔ مذاکرات کے لیے دہشت گردوں کے انکار اور حکومت کے اصرار سے ریاست کی کمزوری ظاہر ہو رہی ہے۔ سنی اتحاد کونسل بنوں دھماکے میں شہید ہونے والے سکیورٹی اہلکاروں کے سوگوار خاندانوں کے ساتھ تعزیت اور یکجہتی کا اظہار کرتی ہے۔