ہنجر وال سے اغوا کے بعد قتل ہونیوالے نوجوان کے قاتل دوست نکلے

لاہور(نامہ نگار) ہنجر وال کے علاقہ سے اغوا ہونے والے 20 سالہ رکشہ ڈرائیور شرافت علی کو اس کے دو دوستوں نے قتل کر کے نعش کھیتوں میں پھینک دی تھی۔ انویسٹی گیشن پولیس ہنجر وال نے اندھے قتل کی اس واردات کا سراغ لگا کر دو ملزموں کو گرفتار کر لیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق جنوری کے مہینے میں ہنجر وال کا رہائشی20 سالہ نوجوان رکشہ ڈرائیور شرافت علی پراسرار طور پر لاپتہ ہو گیا جس کا مقدمہ درج ہوا، ہنجر وال تھانے کے انویسٹی گیشن انچارج انسپکٹر حسنین حیدر نے تفتیش کر کے دو ملزمان ناصر اور مظہر حسین کو حراست میں لیا۔ انہوں نے انکشاف کیا کہ انہوں نے اپنے دوست شرافت کو اغوا کیا اور اسے سرائے مغل کے علاقہ میں فائرنگ کر کے قتل کر کے نعش گنے کے کھیتوں میں پھینک دی اور اس کا رکشہ لے کر آ گئے۔