ہائی کورٹ کے حکم پر18 بچوں، 10خواتین سمیت44 بھٹہ مزدور بازیاب

لاہور(قائع نگار خصوصی)لاہورہائیکورٹ کے مسٹرجسٹس محمد انوارالحق نے 18بچوںاور10خواتین سمیت 44بھٹہ مزدوروں کو بازیاب کراکے رہا کردیاہے۔ فاضل عدالت نے قرار دیا کہ آئینی اور قانونی طور پر کسی شہری سے جبری مشقت نہیں لی جا سکتی۔ درخواست گزارکوثربی بی کی جانب سے عدالت کو بتایاگیاکہ جہانیاںاور وہاڑی کے بھٹہ مالکان ملک طاہراور ملک ذوالقرنین نے 66مزدوروں کو حبس بے جا میں رکھاہوا ہے ان کو مزدوری ادا نہیں کی جاتی ۔ تشدد کا نشانہ بھی بنایا جاتا ہے۔ ان سے زبردستی کام لیا جاتاہے۔فاضل عدالت نے عدالتی بیلف کے ذریعے ان بھٹہ مزدوروں کو بازیاب کراکے عدالت میں پیش کیا جہاں ان کے وکیل ضیاءاللہ بھٹی نے عدالت کو بتایاکہ 66بھٹہ مزدوروں میں سے 44افرادکو عدالتی بیلف نے بازیاب کرالیاہے جبکہ درخواست گزارکوثر بی بی سمیت 22افراد تاحال بھٹہ مالکان کی قید میں سے ہیں۔ فاضل عدالت نے بازیاب کرائے گئے بھٹہ مزدوروں کو رہاکرتے ہوئے بقایامزدوروں کی رہائی کے لئے درخواست دائر کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے سماعت ملتوی کردی۔