اسلام آباد : جائیداد کے جھگڑے پر پرویز خٹک کے 5 قریبی رشتہ دار قتل ‘ خاتون کو کاروبار کے بہانے سنگاپور سے بلا کر مار ڈالا

اسلام آباد : جائیداد کے جھگڑے پر پرویز خٹک کے 5 قریبی رشتہ دار قتل ‘ خاتون کو کاروبار کے بہانے سنگاپور سے بلا کر مار ڈالا

اسلام آباد (اپنے سٹاف رپورٹر سے) وفاقی دارالحکومت میں مختلف واقعات میں تین عورتوں سمیت 9 افراد کو قتل کر دیا گیا جن میں بارہ سالہ بچہ بھی شامل ہے۔ سہالہ سے پراسرار طور پر پھینکی گئیں چھ نعشیں پولیس نے برآمد کر لیں، ایس ایچ او تھانہ سہالہ مقصود قصوری کو معطل کر دیا گیا، انسپکٹر چودھری عابد کو نیا ایس ایچ او تھانہ سہالہ لگا دیا گیا۔ نوائے وقت رپورٹ کے مطابق ایس ایس پی اسلام آباد کا کہنا ہے چترال سے تعلق رکھنے والے نجی موبائل کمپنی کے ڈائریکٹر عامر اللہ خان کو اہلیہ اور تین بیٹوں سمیت قتل کر دیا گیا۔ مقتول عامر اللہ خان فقیر آباد پشاور میں کروڑوں روپے کی جائیداد کے مالک تھے، عامر اللہ کا اپنے بھائی اور بہنوئی کے ساتھ جائیداد کا جھگڑا تھا جبکہ انہیں لینڈ مافیا کی جانب سے بھی دھمکیاں موصول ہوئی تھیں۔ ملزمان کی گرفتاری کے لئے پشاور پولیس سے رابطہ کر لیا۔ ملزمان کو جلد گرفتار کر لیا جائے گا۔ عامر اللہ خان نے دھمکیاں ملنے کے بعد دو کلاشنکوفیں بھی خریدیں۔ نجی ٹی کی کے مطابق مقتول عامر اللہ خان سابق صدارتی ترجمان فرحت اللہ بابر اور موجودہ وزیر اعلیٰ خیبر پی کے پرویز خٹک کے قریبی رشتے دار ہیں جبکہ رکن قومی اسمبلی نفیسہ خٹک کے بھانجے تھے۔ اطلاع ملتے ہی فرحت اللہ بابر اور نفیسہ خٹک پمز ہسپتال پہنچ گئے جبکہ سنگاپور سے آنے والی عورت کو دو کروڑ روپے تاوان کیلئے اغوا کر کے قتل کرنے کے بعد اس کی نعش تھانہ بنی گالہ کے علاقے نالہ کورنگ میں پھینک دی گئی۔ کہوٹہ روڈ پر مشروب کی کمپنی کا سکیورٹی گارڈ بھی قتل کر دیا گیا۔ شہزاد ٹاﺅن کے علاقے میں بھی دو موٹر سائیکل سواروں نے پستول سے فائرنگ کر کے ایک شخص کو قتل کر ڈالا۔ ایک ساتھ چار نعشیں تھانہ سہالہ کے علاقے گوڑھا شاہاں میں ملیں جن میں دو نوجوان مرد، ایک عورت اور بارہ سالہ بچہ شامل ہیں ان کی نعشیں کھیتوں میں پڑی برآمد کر لی گئیں۔ لوہی بھیر کے علاقے میں بھی خالی پلاٹ سے عورت اور مرد کی نعشیں برآمد کر لی گئیں، ایک ہی سرکل سے چھ نعشےں ملنے پر علاقے مےں سراسےمگی پھےل گئی۔ نعشیں پوسٹمارٹم کےلئے پمز منتقل، پولےس نے نعشےں ملنے کی جگہ پر سراغ رساں کتوں کی مدد سے بھی شواہد ےکجا کئے تمام ہلاک شدگان تشدد اور گلا دبانے سے موت کا شکار ہوئے ہےں۔ آئی جی پولیس سکندر حیات نے بتایا نوشہر کے رہائشی عامر خان اس کے 2 بیٹوں حیدر خان اور اکرم خان کی بیٹی رومان کی نعشیں گوڑھا شاھاں سے ملیں جبکہ عامر کی بیوی اور ملازم کی نعشیں لوئی بھیر کے علاقہ سے برآمد کی گئیں۔ سکندر ضیاءنامی مقتولین کے رشتہ دار نے بتایا نادیہ عامر اس کی خالہ ہیں تاہم یہ معلوم نہیں ہو سکا قتل کی واردات کا محرک کیا تھا۔ تھانہ سہالہ کے علاقے مےں ہی مشروب بنانے والی فےکٹری کا سکےورٹی گارڈ بھی گےٹ پر قتل کر دےا گےا، پولےس نے بتاےا کہ پےپسی کولا فےکٹری ماڈل ٹاﺅن کہوٹہ روڈ مےں گےٹ پر رات کے وقت نامعلوم ملزمان نے فائرنگ کر کے سکےورٹی گارڈ کو قتل کر دےا اور فرار ہو گئے۔ پولےس نے نامعلوم ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کر لےا ہے تھانہ آبپارہ کے علاقے مےں واقع ہوٹل مےں رہائش پذےر سنگاپور سے آئی خاتون کو متعدد ملزمان نے کاروبار کرنے کا جھانسہ دے کر اغوا کےا اور دو کروڑ روپے تاوان طلب کےا جس پر مغوےہ کی والدہ نوشابہ تسکےن سکنہ مکان نمبر 333 طارق روڈ کراچی نے تھانہ آبپارہ مےں بےٹی کے اغوا کا مقدمہ درج کراےا۔ مغوےہ کی نعش اےک ملزم کی گرفتاری کے بعد اس کی نشاندہی پر نالہ کورنگ کے پل کے نےچے سے برآمد کر لی گئی۔ مقتولہ سے 50 لاکھ کا سونا چھین کر قتل کر دیا گیا۔ ملزم معاذ نے وقوعہ پر جا کر نعش کی موجودگی کی نشاندہی کی اس دوران مقتولہ کی بزرگ والدہ لاوارث کھڑی روتی رہی اے اےس پی سٹی کی سربراہی مےں وہاں موجود پولےس پارٹی نے انہےں پرسہ دےنا بھی گوارا نہ کےا جبکہ بزرگ خاتون سڑک کے کنارے کنوےنس کےلئے منت سماجت کرتی رہی مقتولہ کی نعش پمز منتقل کر دی گئی جبکہ ملزم معاذ سے تفتےش جاری ہے جبکہ اس کے ساتھےوں عامر وغےرہ کی تلاش جاری ہے پولےس نے مقتولہ کے فون نمبر اور مدعےہ کے سےل فون پر ملزموں کی کالوں سے ان کا سراغ لگاےا ملزم معاذ کا بلےو اےرےا مےں پےکنگ کا دفتر بھی بنا ہوا ہے۔ تھانہ شہزاد ٹاﺅن نے بتاےا علی پور کے رہائشی ابرار حسےن نے اطلاع دی ہے مدعی کے والد غلام حسےن کو دو نامعلوم موٹر سائےکل سواروں نے پستول سے فائرنگ کر کے قتل کر دےا اور فرار ہو گئے، پولےس مصروف تفتےش ہے۔