گرین ٹاؤن میں زیادتی کے بعد قتل ہونے والے بچے کے قتل کا ڈراپ سین ہو گیا قاتل مولوی نکلا اور نہ موذن بلکہ سترہ سالہ حجام تھا،

گرین ٹاؤن میں زیادتی کے  بعد قتل ہونے والے بچے کے قتل کا ڈراپ سین ہو گیا قاتل مولوی نکلا اور نہ موذن بلکہ سترہ سالہ حجام تھا،

نئے سال کے آغاز پر تھانہ گرین ٹاؤن میں ایسا دردناک واقعہ پیش آیا جس نے ہر آنکھ کو اشکبار کر دیا،سات سالہ معصوم بچے معین کو بدفعلی کے بعد قتل کر دیا گیا جس کی لاش مسجد کی دوسری منزل پر پھندے سے لٹکتی ملی۔ علاقے میں شدید احتجاج بھی ہوا اور پولیس نے مسجد کے موذن اور قاری سمیت دس افراد کو حراست میں لے لیا لیکن تفتیش میں تو ملزم وہ نکلا جس پر سب سے کم شک تھا سترہ سالہ شعیب نے قتل کا اعتراف بھی کیا اور  ڈی این اے فرانزک رپورٹ نے اُسے گناہ گار ثابت بھی کر دیا، شعیب نے معین کو ورغلایا اور راز فاش ہونے کے ڈر سے اُسے قتل کر دیا۔ سی سی پی او لاہور امین وینس نے ملزم کو میڈیا کے سامنے پیش کیا۔۔