مشرف ہی نہیں تمام شریک ملزمان کےخلاف کارروائی کی جائے:لاہور بار

 لاہور ( اپنے نامہ نگار سے )مشرف اور اس کے دیگر شریک جرم افراد کا آئین کے آرٹیکل چھ کے تحت فوری ٹرائل اور قومی جوڈیشل پالیسی کے استعمال کے خلاف ہڑتال کرنے اور ریلی نکالنے کے لئے لاہور بار ایسوسی ایشن کے جنرل ہاﺅس میں متفقہ قراداد منظور کی گئی ہے۔ تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز صدر بار نعمان قریشی کی زیر صدارت ایوان عدل بار روم میں وکلاءکے جنرل ہاﺅس کا اجلاس منعقد کیا گیا جس میں وکلاءکی کثیر تعداد نے شرکت کی صدر لاہور بار نعمان قریشی نے وکلاءسے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آئین کو توڑنا ہی غلط نہیں ہے بلکہ میںسمجھتا ہوں کہ جمہوریت کے ہوتے ہوئے اور آئین پر عملدر آمد نہ کرنا بھی جمہوریت کا حسن نہیں ہے اور یہ بھی آئین سے چشم پوشی کے زمرے میں آتا ہے انہوں نے کہا کہ ایسی جمہوریت کا کیا فائدہ کہ آئین کے پر عمل درآمد کروانے اور غدار کو سزا دلوانے کے لئے لاہور بار حکمرانوں کو جگائے انہوں نے کہا کہ سابق صدر مشرف کا ہی نہیں بلکہ اس کے ساتھ تما م شریک جرم لوگوں کابلا امتیاز ٹرائل ہونا چاہئے انہوں نے کہا کہ آئین زندہ ہے اور سب کے سامنے ہے مگر المیہ یہ ہے کہ جمہوری حکومت کو لاہور بار یا د کروا رہی ہے انہوں نے کہا کہ جسے جیل یا تھانے میں ہونا چاہئے وہ اس وقت اپنے بنائے ہوئے عشرت کدہ میں زندگی کی تمام تر آرائشوں کے ساتھ رہ رہا ہے انہوں نے کہا کہ ملک اور آئین کے ان غداروں کا فوری ٹرائل ہونا چاہئے وکلاءکے حوالے سے صدر بار نے کہا کہ کچھ ایسے واقعات بھی ہوئے ہیں کہ جس میں ہمارے دوست وکلاء آپس میں دست و گریبان ہوئے جو وکلاءکے دامن پر ایک داغ ہے۔