جعلی مشروب ساز فیکٹری سیل، پنجاب فوڈ اتھارٹی کا پیک اشیاءکی چیکنگ کا فیصلہ

لاہور (نیوز رپورٹر) پنجاب فوڈ اتھارٹی کے فوڈ سیفٹی آفیسرز اور فوڈ انسپکٹرز پر مشتمل ٹیم نے مشروبات بنانے والی فیکٹری پر چھاپہ مارا اور مضر صحت اشیاءکی تیاری پر فیکٹری سیل کر کے ذمہ داران کے خلاف کارروائی کاآغاز کر دیا گیا ہے۔تفصیلات کے مطابق شاہ پور کانجراں میں واقع پریمیر کولا فیکٹری میں عرفان احمد نامی شخص ناقص مشروبات، جوس اور منرل واٹر تیار کرتا تھا۔ فوڈ سیفٹی آفیسرز فریحہ انور، صباءناصر، کومل اکبر اور انیق الرحمن نے انسپکشن سے پہلے پراڈکٹ کے نمونہ جات فوڈ لیبارٹری بھجوائے۔ پنجاب فوڈ اتھارٹی نے 5 نومبر 2012ءسے پیک کی ہوئی اشیائے خورد و نوش کی چیکنگ کا فیصلہ کیا ہے۔ اس حوالے سے صوبے بھر میں تمام مینو فیکچرنگ فوڈ آئٹم کی لسٹیں تیار کر لی ہیں۔ ابتدائی طور پر آئندہ ہفتے سے صوبے بھر میں پیک شدہ دودھ کی چیکنگ کی جائے گی۔ سیکرٹری خوراک پنجاب اور سربراہ پنجاب فوڈ اتھارٹی عرفان علی نے نوائے وقت کو بتایا کہ اس اقدام کا مقصد چھاپے مارنا نہیں بلکہ شہریوں کو صاف ستھری کھانے پینے کی اشیاءفراہم کرنا ہے۔