جہیز نہ لانے پر سسرالیوں کا پہلے روز ہی دلہن پر وحشیانہ تشدد، طلاق دیکر گھر سے نکال دیا

جہیز نہ لانے پر سسرالیوں کا پہلے روز ہی دلہن پر وحشیانہ تشدد، طلاق دیکر گھر سے نکال دیا

حافظ آباد + گوجرانوالہ (نمائندہ نوائے وقت+ نمائندہ خصوصی) گوجرانوالہ میں سرالیوں نے جہیز نہ لانے پر شادی کے پہلے روز ہی نئی نویلی دلہن کو وحشیانہ تشدد کا نشانہ بناتے ہوئے طلاق دیکر گھر سے نکال دیا۔ دلہن کے رشتہ داروں نے گوجرانوالہ روڑ پر احتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے ٹریفک بلاک کر دی۔ تفصیل کے مطابق حافظ آباد کے علاقہ قادرآباد کے رہائشی محنت کش یوسف کی بیٹی آسیہ پروین کی شادی گزشتہ روز گوجرانوالہ کے رہائشی عدنان سے ہوئی۔ آسیہ جب پہلے روز اپنے سسرال گئی تو اس کے سسرالیوں نے جہیز نہ لانے پر اس پر ظلم و ستم کی انتہا کر دی۔ سسرالیوں نے پہلے تو اسے بجلی کا کرنٹ لگایا پھر بال کاٹے اور مختلف طریقوں سے تشدد کا نشانہ بنایا۔ آسیہ کا کہنا ہے کہ اُسے صرف اس بات کی سزا دی گئی کہ اسکے غریب والدین نے اُسے جہیز نہیں دیا تھا۔ آسیہ کے والدین کا کہنا ہے کہ عدنان کے گھر والوں سے جہیز نہ دینے کی پہلے بات کی گئی تھی لیکن جب ہم اپنی بیٹی کو جہیز نہ دے سکے تو انہوں نے شادی کے پہلے روز ہی اُسے تشدد کا نشانہ بنایا اور طلاق دیکر گھر سے نکال دیا۔ واقعہ کے خلاف آسیہ پروین کے رشتہ داروں کی بڑی تعداد نے گوجرانوالہ روڑ پر احتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے جلوس نکالا، احتجاج کے دوران دلہن کی والدہ اور خالہ بیہوش ہو گئیں۔ دلہن کے والدین اور دیگر رشتہ داروں نے وزیراعلیٰ پنجاب سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ آسیہ کے سسرالیوں کیخلاف کارروائی کی جائے۔