پارلیمنٹ کی غلام گردشوں میں ’’مائنس ون‘‘ فارمولا کی بازگشت

پارلیمنٹ کی غلام گردشوں میں ’’مائنس ون‘‘ فارمولا کی بازگشت

پیر کو سینٹ کا اجلاس دو روز کے وقفے کے بعد منعقد ہوا پرایئویٹ ممبرز ڈے تھا اجلاس کا 26رکنی ایجنڈا تھا 25رکن ایجنڈا نمٹا دیا گیا لیکن وزیر خارجہ خواجہ آصف کی بیرون ملک مصروفیات کی وجہ سے امریکہ کے وزیر خارجہ کے جنوبی ایشیاء سے متعلق نئی امریکی پالیسی کے حوالے سے دورہ پاکستان پر بحث نہ ہو سکی پیر کو پارلیمنٹ کی لابیوں میں لندن میں میاں نواز شریف کی زیر صدارت ہونے والے ہونے والے مسلم لیگی رہنمائوں کا اجلاس موضوع گفتگو بنا ہوا تھا بیشتر پارلیمنٹیریز کی رائے تھی کہ میاں نواز شریف کو پاکستان واپس آکر تمام مقدمات کا سامنا کرنا چاہئے اور پارٹی کی قیادت کر نی چاہیے پارلیمنٹیرینز نے ’’مائنس ون ‘‘ فارمولہ مسترد کر دیا چوہدری نثار علی خان نے پنجاب ہائوس میں اپنی ’’بیٹھک‘‘ لگائی ان کی صحافیوں سے غیر رسمی گفتگو بارے میں پارلیمنٹیرینز چبھتے سوالات کرتے رہے ۔سینیٹر چوہدری تنویر خان متحرک پارلیمنٹیرین ہیں کم بیش ہر روز ان کی طرف پیش کی گئی تحاریک ، قرار دادیں ۔ توجہ دلائو نوٹس یا وقفہ سوالات میں سوالات ہوتے ہیں انہوں نے ایوان میں ایران ،افغانستان کے ساتھ ملنے والی سرحدوں پر موثر انتظامات کی اہمیت اور ضرورت کو زیر بحث لانے کے لئے تحریک پیش کی اسی طرح انہوں نے تجارتی عمارات بالخصوص دارالحکومت اسلام آباد کے ہوٹلوں اور ملک کے کنٹونمنٹ علاقوں میں وقع عمارت میں کسی ہنگامی صورت حال سے نمٹنے کے لئے حفاظتی انتظامات کی ضرورت اور اہمیت کو زیر بحث لانے کے لئے پیش کیا ایران اور افغانستان کے ساتھ ملنے والی سرحدوں کے بارے میں چوہدری تنویر کی تحریک کی باری ایک سال بعد آئی چوہدری تنویر خان پہلی بار سینیٹر منتخب ہوئے ہیں لیکن حکومتی بنچوں میں اس لحاظ سے ان کی کارکردگی شاندار ہے وہ اپوزیشن کے سینیٹرز کے مقابلے میں اپنا ایجنڈا لے کر آتے ہیں اسی طرح جمعیت علما اسلام )ف) کے پارلیمانی لیڈر سینیٹر طلحہ محمود اور ایم کیو ایم کے پارلیمانی لیڈر سینیٹر طاہر مشہدی بھی چوہدری تنویر کی طرح ایوان میں پوری تیاری کر کے آتے ہیں چیئرمین سینیٹ نے ایوان بالا کی مجلس قائمہ برائے قانون و انصاف کی رپورٹ کے باجود تاحال قانون نہ بنانے کا نوٹس لیا ہے اور جواب طلب کیا ہے کہ اس حوالے سے تاحال کوئی قانون کیوں نہ بن سکا وزیر مملکت برائے داخلہ طلال چوہدری نے چیئرمین سینیٹ کو یقین دہانی کروائی ہے کہ یہ سفارشات وزارت کیڈ اور سی ڈی اے کو بھیج دی جائیں گی ارکان سینیٹ نے اسلام آباد میں کئی تجارتی عمارات بالخصوص کثیر المنزلہ فلیٹس و ہوٹلز میں ہنگامی صورتحال کے لیے حفاظتی انتظامات نہ ہونے پر اظہار تشویش کیا ہے اور حکومت سے سروے کا مطالبہ کر دیا گیا ہے وزیر مملکت برائے داخلہ طلال چودھری نے کہا ہے کہ افغانستان کے ساتھ تجارت ضروری ہے مگر غیر قانونی تجارت سے پاکستان کو نقصان ہوتا ہے پاکستان نے 12قبائل کو پرمٹ جاری کیا ہوا ہے جو پرمٹ پر افغانستان جا سکتے ہیں چوہدری تنویر خان کی بارڈر مینجمنٹ پر تحریک جواب دیتے ہوئے کیا وزیر مملکت برائے داخلہ طلال چودھری نے کہا کہ بارڈر کی مینجمنٹ اہم مسئلہ ہے مگر اس پر کام شروع ہو چکا ہے تین وجوہات میں بارڈر مینجمنٹ ضروری ہے وزیر مملکت برائے داخلہ طلال چودھری نے سینیٹ کو آگاہ کیا ہے کہ وفاقی دارالحکومت کے رجسٹر 34بھٹوں پر بچوں کی مشقت ختم کروانے کے لیے تین نئے قوانین زیر غور ہیں سزائوں اور جرمانوں میں اضافہ کیا جا رہا ہے۔