آسٹریلیا کا پانچویں مرتبہ ورلڈ چیمپئن بننے کا خواب چکنا چور

سرفراز نواز.....
بھارت نے عالمی کپ ٹورنامنٹ کے دوسرے کوارٹرفائنل میں دفاعی چیمپئن آسٹریلیا کی ٹیم کو 5 وکٹوں سے شکست دے کر پانچویں مرتبہ ورلڈ چیمپئن بننے کا خواب چکنا چور کر دیا ہے جس کا تمام سہرا بھارتی باولرز کے ساتھ ساتھ سچن ٹنڈولکر اور یووراج سنگھ کے عمدہ کھیل کو جاتا ہے۔ آسٹریلیا کی ٹیم کو ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کرنے کا بہترین موقع ملا تھا ماسوائے رکی پونٹنگ کے، کوئی بلے باز بڑی اننگز کھیلنے میں کامیاب نہ ہو سکا جس کی سب سے بڑی وجہ آسٹریلوی ٹیم کے کھلاڑی پاکستان ٹیم سے ہونے والی شکست کے بعد اپنا مورال کھو چکے تھے۔ پاکستان کیخلاف بھی آسٹریلوی ٹیم کوئی بڑا ٹوٹل بنانے میں کامیاب نہیں ہو سکی تھی۔ بھارت کیخلاف میچ میں بھی ایسا ہی ہوا اور عالمی چیمپئن ٹیم مقررہ اوورز میں صرف 260 رنز تک ہی محدود رہی۔ 261 رنز کا ٹارگٹ بھارت جیسی مضبوط بیٹنگ رکھنے والی ٹیم کیلئے کوئی مشکل نہیں تھا۔ بھارت کو جہاں ہوم گراونڈ اور کراوڈ کا ایڈوانٹیج تھا وہیں اس کے پاس نمبر آٹھ تک بیٹنگ کرنے والے کھلاڑی بھی موجود تھے۔ یہاں پر بھارتی تجربہ کار بلے باز سچن ٹنڈولکر کی تعریف کرنا ضروری ہے کیونکہ انہوں نے نصف سنچری سکور کر کے اپنی ٹیم کی جیت کی بنیاد رکھی تھی تاہم بعد میں یووراج سنگھ اور سریش رائنا نے ذمہ دارانہ کھیل کا مظاہرہ کیا اور مسلسل 1999ءسے عالمی چیمپئن کا تاج اپنے سر پر سجانے والی آسٹریلوی ٹیم کی پانچویں مرتبہ چیمپئن بننے کی امیدوں پر پانی پھر دیا۔ بھارت کی ٹیم نے سیمی فائنل کے لیے کوالیفائی کر لیا ہے جہاں اس کا مقابلہ پاکستان سے ہوگا۔
آسٹریلوی ٹیم کے کپتان رکی پونٹنگ نے بارہا کوشش کی کہ کسی طرف سے وہ میچ میں واپس آ سکیں لیکن یووراج سنگھ اپنے ارادے بدل چکے تھے۔ ایسا دکھائی دیتا ہے کہ بھارتی ٹیم نے آسٹریلیا کے فاسٹ باولنگ کے ہتھیار کو نبٹنے کے لئے پہلے سے حکمت عملی بنا رکھی تھی آسٹریلوی ٹیم کو جو نقصان اٹھانا پڑا وہ اس کے پاس تجربہ کار سپن باولرز کا نہ ہونا تھا۔ پاکستان اور بھارت دونوں روایتی حریف ٹیموں کے درمیان ہونے والا سیمی فائنل میچ ہی اصل فائنل ہو گا۔ کروڑوں کرکٹ شائقین کی نظریں اس میچ پر لگی ہوئی ہیں۔ برصغیر سے تعلق رکھنے والے ٹیموں کے درمیان ہونے والے سیمی فائنل میچ میں اعصاب کی جنگ ہوگی جس بھی ٹیم کے کھلاڑی اپنے اعصاب پر قابو پانے میں کامیاب ہو گئے فائنل تک رسائی اسی ٹیم کی ہوگی۔