کورم کی نشاندہی نے اپوزیشن کیلئے ”خفت“ کا سامان پیدا کر دیا

کورم کی نشاندہی نے اپوزیشن کیلئے ”خفت“ کا سامان پیدا کر دیا

کورم کی نشاندہی نے اپوزیشن کیلئے ’’خفت‘‘ کا سامان پیدا کر دیا
جمعرات کو قومی اسمبلی اور سینیٹ کے اجلاس صبح کے اوقا ت میں اس لئے منعقد ہوئے کہ بعد دوپہر دو بجے سپریم کورٹ نے پانامہ پیپرز لیکس میں پاکستان کے منتخب وزیر اعظم کی قسمت کے فیصلہ کا اعلان کرنا تھا سپریم کورٹ کے فیصلے کے پیش نظر شاہراہ دستور پر سخت حفاظتی انتظامات کئے گئے تھے بیشتر ارکان پارلیمنٹ نے پانامہ پیپرز لیکس پر فیصلہ سننے کے لئے سپریم کورٹ جانا تھا سو صبح صبح ہی پارلیمنٹ کے دونوں اجلاسوں کی کارروائی نمٹا دی گئی جمعرات کو تمام ارکان پارلیمنٹ کی توجہ پانامہ پیپرز لیکس پر مرکوز تھی اس لئے پارلیمان کی کارروائی میں پوری طرح دلچسپی نہیں لی قومی اسمبلی پیپلز پارٹی نے سیاسی کارکنوں کو لاپتہ کرنے اور حکومت کی جانب سے کوئی جواب نہ دینے پر احتجاج جاری رکھا اور مسلسل ساتویں روز بھی واک آئوٹ کیا۔ قومی اسمبلی میں پیپلز پارٹی اور پی ٹی آئی کے ارکان کے واک آئوٹ کے بعد پی ٹی آئی کی رکن عائشہ گلالئی نے ایوان میں کورم کی نشاندہی کر دی۔ ڈپٹی سپیکر نے ایوان میں گنتی کرائی تو ایوان میں ارکان کی مطلوبہ تعداد پوری ہونے کی بناء پر اجلاس کی کارروائی جاری رکھی اس طرح اپوزیشن کی نو آموز خاتون رکن کی وجہ سے اپوزیشن کو خفت کا سامنا کرنا پڑا اپوزیشن لیڈر سید خورشید شاہ نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کی حکومت جب بھی آئی اس نے پارلیمنٹ کو کمزور کیا، آج کی پارلیمنٹ میری سیاسی تاریخ میں سب سے زیادہ کمزور حکومت مسلم لیگ )ن) کی ہے سید خورشید شاہ کو پرویز مشرف کا دور بہت یاد آرہا تھا ان کا کہنا ہے کہ ’’ مشرف دور کی پارلیمنٹ اس سے زیادہ مضبوط تھی،آج پارلیمنٹ کے کان بند کردیئے گئے ہیں،ثابت ہوگیا ہے کہ سپیکر اور حکومت بے بس ہوگئے ہیں،ڈان لیکس میں شریف وزیر کو قربانی کا بکرا بنایا گیا اور آگ کو بجھانے کی کوشش کی گئی مگر ڈان لیکس کی آگ اب بجھے گی نہیں‘‘۔ مشیر خارجہ سرتاج عزیز نے کہا ہے کہ کرنل (ر) حبیب ظاہر کی بازیابی کے لئے نیپال کی حکومت کے ساتھ مل کر کوششیں کی جا رہی ہیں، ابتدائی تحقیقات کے مطابق حبیب ظاہر کو کھٹمنڈو ایئر پورٹ پر لینے کے لئے آنے اور ہوٹل میں ٹھہرانے والے تمام افراد کا تعلق بھارت سے ہے۔ کرنل (ر) حبیب ظاہر کو ایک کمپنی نے ملازمت کے لئے نیپال میں بلایا تھا اور انہوں نے لاہور سے براستہ لندن کھٹمنڈو کا سفر کیا۔ جو لوگ انہیں ایئر پورٹ سے لینے کے لئے آئے، ان کے لئے ٹکٹ اور ہوٹل میں ٹھہرانے کا انتظام کیا، وہ تمام کے تمام بھارت کے شہری تھے وفاقی وزیر پٹرولیم و قدرتی وسائل شاہد خاقان عباسی 8 مئی کو ایوان بالا میں ریکوڈک پراجیکٹ سے متعلق معاہدے کے حوالے سے ان کیمرہ بریفنگ دیں گے چیئرمین سینیٹ میاں رضا ربانی نے ہدایت کی ہے کہ گوادر پورٹ کے محصولات سے چینی کمپنی کے حصہ کی مکمل تفصیلات اور معاہدہ کے مندرجات ایوان میں پیش کئے جائیں۔۔سینیٹ کا اجلاس (آج) جمعہ کی صبح 10 بجے تک ملتوی کر دیا گیا۔ ہائوس بزنس کمیٹی کے اجلاس میں طے شدہ امور کے مطابق قومی اسمبلی کا اجلاس آج غیر معینہ مدت کے لئے ملتوی کر دیا جائے گا ۔
ڈائری