سینٹ اجلاس غیرمعینہ مدت تک ملتوی‘ احتساب بل پیش نہ ہو سکا

بالآخر اےوان بالا کا 86واں سےشن مجموعی طور پر 11روز تک جاری رہنے کے بعد غےر معےنہ مدت کے ملتوی کر دےا گےا۔ حکومت قومی رےگولےٹری اتھارٹی کے قےام کے سوا کوئی بل منظور نہےں کراسکی، احتساب کا نےا بل اےوان بالا مےں پےش نہےں کےا جاسکا۔ بہر حال سینٹ اجلاس مےں کھل کر بلوچستان کی بگڑتی صورت حال پر اظہار خےال کےا گیا۔ وزےر داخلہ رحمن ملک کو بلوچستان کی صورتحال پر زور دار بھاشن دےنے کا موقع مل گےا۔ بزرگ مسلم لےگی رہنما محمد علی ہوتی کی وفات پر دعائے مغفرت کی گئی لےکن کسی پارلےمنٹےرےن کو اس بات کی توفےق نہےں ہوئی کہ محمد علی ہوتی کو خراج عقےدت پےش کرے۔ ڈپٹی چےئرمےن سےنےٹ صابر بلوچ نے پےپلز پارٹی کے سےنےٹر فےصل رضا عابدی کو عدلےہ کے بارے مےں کھل کر بولنے کا موقع دیا۔ مسلم لےگی ارکان تو ان کی تقرےر کے دوران اےوان سے اٹھ کر چلے گئے۔
 لےکن وہ مسلسل عدلےہ کے بارے مےں اظہار خےال کرتے رہے لےکن ڈپٹی چےئرمےن نے ان کے الفاط کارروائی سے حذف کئے اور نہ ہی ان کو خاموش کراےا۔ پےپلزپارٹی کے ارکان ڈےسک بجا کر داد دےتے رہے ۔