دورہ ویسٹ انڈیز....پاکستان ہارا میچ جیت گیا

کالم نگار  |  محمد صدیق

 دورہ¿ ویسٹ انڈیز میں پانچ ون ڈے میچوں کی سیریز کے پہلے ہی میچ میں پاکستان نے ویسٹ انڈیز کو 126 رنز سے شکست دے کر میچ جیت لیا۔ ویسٹ انڈیز نے ٹاس جیت کر پاکستان کو پہلے کھیلنے کی دعوت دی۔ بارش زدہ وکٹ پر ویسٹ انڈیز کا پاکستان کو پہلے کھلانے کا فیصلہ درست ثابت ہوا اور لگ رہا تھا کہ پاکستان ایک مرتبہ پھر چیمپئنز ٹرافی والی ٹیم ثابت ہو رہی ہے۔ جب پاکستان کی 4 کریم وکٹ 24 رنز پر اور پھر عمر اکمل کے آ¶ٹ ہونے کے بعد 49 سکور پر پاکستان کی 5 وکٹ گر چکی تھیں۔ پہلی 5 گرنے والی وکٹوں میں ناصر جمشید کو غلط آ¶ٹ دیا گیا باقی احمد شہزاد، محمد حفیظ، اسد شفیق کچھ حد تک عمر اکمل کو سمجھ نہیں آ رہی تھی کہ اس بارش زدہ وکٹ پر کیا حکمت عملی اپنائی جائے۔ گیند چھوڑتے تھے تو بولڈ ہو جاتے تھے، سٹروک کھیلتے تھے تو پھر کیچ آ¶ٹ ہوتے تھے۔ ایسی صورت میں صرف وکٹ پر ٹھہرنا ہی مقصود ہوتا ہے تاکہ وکٹ سے نمی سوکھ جائے تو پھر با¶لروں پر اٹیک کیا جا سکتا ہے جیسے شاہد آفریدی نے کیا۔ گذشتہ روزمجھے کافی ٹیلیفون آتے رہے کہ میں آفریدی کی مخالفت کرتا رہتا ہوں اور آج انہی کی آل را¶نڈر پرفارمنس کی وجہ سے پاکستان میچ جیت گیا۔ اس متعلق میں صرف یہی کہوں گا کہ جب اپنے پیارے وطن کے متعلق لکھا یا سوچا جائے تو نیوٹرل ہو کر لکھنا چاہئے۔ یہ بات درست ہے کہ آفریدی نے اچھی بیٹنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے ایک مشکل وقت میں 76 رنز بنائے اور پھر 12 رنز دے کر 7 وکٹ حاصل کیں۔ میرے نزدیک پاکستان یہ میچ ہار چکا تھا کہ مصباح او رآفریدی پاکستان کو ہارا ہوا میچ جتا گئے اور یہ بھی نہیں بھولنا چاہئے کہ آفریدی پاکستان کی جانب سے یہ 355واں میچ کھیل رہا تھا اور 355 میچوں میں یہ انکی 35ویں نصف سنچری تھی اور جہاں تک مجھے یاد پڑتا ہے آفریدی کی طرف سے 355 میچوں میں یہ پانچویں یا چھٹی اننگز ہو گی جس سے پاکستان کو فتح نصیب ہوئی اور یہ پرفارمنس ملک کے کام آئی۔ بقیہ میچوں میں ان کی پرفارمنس پاکستان کو تو نہ جتا سکی ہاں البتہ ان کی ٹیم میں موجودگی کیلئے تمام پرفارمنس تھیں خیر شاہد آفریدی کی عمدہ پرفارمنس سے پاکستان جیت گیا اور دعا ہے کہ آنے والے میچوں میں بھی آفریدی بہتر سے بہتر پرفارمنس دے گا۔ آفریدی نے بہت اچھی با¶لنگ کا مظاہرہ کیا ہے اور ویسٹ انڈیز ٹیم پر اپنی دھاک بٹھادی ہے بقیہ میچوں میں آفریدی بیٹنگ کی بجائے با¶لنگ میں زیادہ کامیاب ہو گا۔ آج پہلے میچ کے بعد یہ بات یقینی ہے کہ پاکستانی ٹیم ویسٹ انڈیز کی اس ٹیم سے بہتر نظر آتی ہے خاص طور پر با¶لنگ میں پاکستانی ٹیم بہت بہتر ہے اور موجودہ سیریز جیت سکتی ہے۔ مجموعی طور سے پاکستان ایک یقینی ہارا ہوا میچ آفریدی کی آل را¶نڈر پرفارمنس سے جیت گیا۔ عمران خان اکثر کہا کرتے تھے جب وہ کرکٹ کھیلا کرتے تھے کہ 75 گز کی با¶نڈری کسی بھی کھلاڑی کے پرکھنے کا پیمانہ ہوتا ہے۔ کوئی سلیکٹر جرنلسٹ کپتان چاہے کتنا بھی کسی کھلاڑی کیخلاف کیوں نہ ہو وہ 75 گز کی با¶نڈری میں کھڑا ہو کر ثابت کرتا ہے کہ وہ ٹیم میں شمولیت کا اہل تھا یا سفارشی تھا اور آج 355 میچوں کے بعد آفریدی نے ثابت کیا کہ وہ اب ٹیم میں شمولیت کا اہل ہے اور 75 گز کی با¶نڈری میں آج آفریدی آفریدی ہو گئی۔ عمر اکمل نے آج اچھی وکٹ کیپنگ کا مظاہرہ کیا ہے۔ اگر عقل سے بیٹنگ بھی کرے تو ون ڈے کرکٹ اور T-20 میچوں میں اپنی جگہ پکی کر سکتا ہے۔ محمد عرفان بہت جلد انٹرکیشنل کرکٹ میں با¶لنگ کے رموز سیکھ رہا ہے جو اچھی بات ہے۔