ایوان بالا میں نیئر بخاری کوپارلیمانی خدمات پر زبردست خراج تحسین

ایوان بالا میں نیئر بخاری کوپارلیمانی خدمات پر زبردست خراج تحسین

منگل کو ریٹائر ہونے والے 52 سینیٹرز کا چیئرمین سینٹ اور دیگر ارکان کے ساتھ پارلیمنٹ ہائوس کے صدر دروازے پر الوداعی گروپ فوٹو سیشن ہوا ،جمعرات کو نو منتخب ارکان حلف اٹھائیں گے۔ سینٹ کے ارکان کے فوٹو سیشن کے دوران ہی یہ اطلاع مل گئی کہ وزیراعظم نے بھی رضا ربانی کو چیئرمین بنانے کے فیصلے کی توثیق کر دی ،پارلیمنٹ کی غلام گردشوں میں میاں رضا ربانی کو چیئرمین سینٹ بنانے کا معاملہ موضوع گفتگو رہا ، ارکان نے میاں رضا ربانی جیسے تجربہ کا ر پارلیمنٹیرین کو چیئرمین سینٹ بنانے کا خیر مقدم کیا ،حکومتی اور اپوزیشن ارکان کی یہ رائے تھی کہ میاں رضا ربانی گذشتہ 12سال کے دوران پارلیمنٹیرین کی حیثیت سے گراں قدر خدمات انجام دی ہیں۔ 18ویں ترمیم کی تیاری میں کلیدی کردار ادا کیا ہے۔ جمہوریت کی بحالی کے جدوجہد کی ہے اور کبھی اصولوں پر کمرومائز نہیں کیا اب دیکھنا یہ ہے چیئرمین سینٹ کی حیثیت سے وہ حکومت اور اپوزیشن کے ساتھ کس حد تک انصاف کرتے ہیں۔
منگل موجودہ چیئرمین سید نیر بخاری کا دن تھا۔نیئر حسین بخاری نے سابق چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کو خصوصی مراعات کی فراہمی کے معاملے پر مزید غور موخر کردیا ہے۔ سینیٹر اعتزاز احسن نے قائد ایوان سینیٹر راجہ ظفر الحق کی طرف سے معاملہ عدالت میں ہونے کی وجہ سے اس معاملے کو زیر بحث نہ لانے اور قرارداد پیش نہ کرنے کے موقف سے اتفاق کرلیا جس پر سینیٹر فر حت اللہ بابر نے احتجاجاً واک آوٹ کر دیا ،سابق چیف جسٹس کو دی گئی مراعات پر قرارداد لانے کے لئے تحریک پیش کرنے کی اجازت طلب کی۔ چیئرمین نے ایوان کی رائے لینے کے بعد قرارداد پیش کرنے کی اجازت دیدی۔