ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ پاکستانی شکست کا باعث بنا

کالم نگار  |  محمد صدیق
ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ پاکستانی شکست کا باعث بنا

پاکستان کو شکست دے کر سری لنکا نے ایشیاکپ جیت لیا اور پوری قوم سوگوار ہو گئی۔ پاکستان یہ فائنل اسی وقت ہار گیا تھا جب مصباح الحق نے ٹاس جیت کر پہلے کھیلنے کا فیصلہ کیا تھا۔ ڈے اینڈ نائٹ میچ میں یہی پرابلم ہوتی ہے کہ پہلے باؤلنگ والی ٹیم دونوں سیشن میں فائدے میں رہتی ہے۔ پہلے باؤلنگ سے سوکھی گیند سے مخالف کو جلد آؤٹ کر دیتی ہے اور دوسرے وقت گیلے گیند سے عمدہ بیٹنگ کرتی ہے۔ گیند گیلا ہونے سے نہ ٹرن ہوتا ہے نہ سوئنگ ہوتا ہے اور مصباح الحق کو اللہ تعالیٰ نے ٹاس جیت کر فائنل جیتنے کا موقع فراہم کیا جو ضائع کر دیا گیا۔ 18 رنز پر پاکستان نے 3 قیمتی وکٹ گنوا دیں گو بعد میں مصباح الحق، فواد عالم اور عمر اکمل کی بدولت پاکستان کھیل میں واپس آیا اور 260 رنز بنا گیا مگر شبنم زدہ وکٹ پر یہ کم سکور تھا۔پورے ٹورنامنٹ میں 70 فیصد وہ ٹیمیں جیتیں جنہوں نے دوسرے وقت بیٹنگ کی۔ مصباح یہی دیکھ کر پہلے باؤلنگ کرتے تو پاکستان فاتح ہوتا۔ پورے میچ میں پاکستانی ٹیم کی کوئی پلاننگ نظر نہیں آئی۔ مجموعی طور سے پاکستان نے قوم کو مایوس کیا۔ پاکستانی ٹیم فٹ بھی نہ تھی۔ آفریدی، عمرگل اور احمد شہزاد کھیلے مگر وہ ان فٹ تھے۔ پاکستان گو فائنل ہار گیا مگر بنگلہ دیش میں 16 مارچ سے ٹی ٹونٹی ورلڈکپ کھیلا جانا ہے۔ پاکستانی کھلاڑیوں کو اچھی پریکٹس ملی ہے۔ ایونٹ میں کام آئے گی۔